انکولہ:سرکاری ہیلتھ سنٹر بیمار زدہ :ڈاکٹر اور عملہ نہ ہونے سے دیہی عوام پریشان

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 13th November 2017, 6:14 PM | ساحلی خبریں |

انکولہ:13/ نومبر (ایس اؤنیوز)دیہی علاقوں کے شہریوں کی صحت مندی کا خیال رکھتے ہوئے سرکار نے دیہاتوں میں پرائمری ہیلتھ سنٹر س کا قیام کیا ہے لیکن وہ کسی حالت میں بھی عوام کی کسی بھلائی کے لئے استعمال نہیں ہورہے ہیں۔ جس کی تازہ مثال انکولہ تعلقہ کے ہٹی کیری نامی دیہات کا ہیلتھ سنٹر ہے۔ خیال رہے کہ اترکنڑا ضلع میں یہ اسپتال سب سے زیادہ وسیع و عریض ہونے کی بات کہی جا تی ہے لیکن آج یہ اسپتال اپنی خستگی کی وجہ سے بیمارزدہ ہے۔

متعلقہ اسپتال کو گذشتہ کئی مہینوں سے ڈاکٹر سمیت کوئی بھی مناسب عملہ حاضر نہیں ہونے سے علاقہ کے مریض مشکلات کا سامنا کررہے ہیں۔ مکینوں کو اپنے علاج کے لئے ادھر ادھر بھاگ دوڑ کرنی ضرور ی ہے ورنہ جان کب نکل پتہ نہیں۔ اس کے علاوہ لاکھوں روپیوں کی لاگت سے تعمیرکردہ اسپتال کی عمارتیں خستہ ہوکر ناجائز افعال کی آماجگاہ ہونے کا عوام نے الزام لگایاہے۔ 15سے 20ایکڑ وسعت والایہ اسپتال سہولیات سے محروم ہے۔ یہ اسپتال کل تک ضلع کا سب سے بڑا تعلقہ اسپتال مانا جاتاتھا اور یہاں بیک وقت 120اندرونی مریضوں کا علاج ہوا کرتاتھا مگر افسوس آج یہ اسپتال خود مریض کی علامت بنا ہواہے۔

کہنے کو اسپتال کے لئے ایک ڈاکٹر ، کمپاؤنڈر اور معاون کے عہدے منظور ہیں لیکن عوام کا الزام ہے کہ کئی مہینوں سے یہاں کوئی علا ج نہیں ہورہاہے۔ علاج کے لئے جب بھی اسپتال کا رخ کریں وہاں دروازے پر بڑاقفل دکھائی دے گا۔ ضروری علاج کے موقعوں پر ڈاکٹر وں کاملنا محال توہے ہی وہیں 100-150میٹر دور قومی شاہراہ پر اگر کوئی جان لیوا حادثہ پیش آتاہے تو کاروار یا انکولہ کا رخ کرنا مجبوری ہے اور اس وقت مریض بچ پاتاہے تو اس کی قسمت۔

اسپتال کی درگت پر عوام نے کہاہے کہ ہٹی کیری سمیت اطراف کے کئی دیہاتوں کے ہزاروں عوام کے لئے یہی ایک اسپتال ہے۔ یہاں جوبھی ڈاکٹر سمیت عملہ تقرر کیا جاتاہے اس کو وقت پر ٹھیک طرح سے ڈیوٹی انجام دینے کی تاکید کی جائے اور اس کے علاوہ مطلوبہ عملے کو نامزد کرنے کا مطالبہ کیاہے۔

20ایکڑ کی زمین پر اسپتال کے لئے ضروری کئی عمارات ہیں، لیکن صحیح نگرانی نہیں ہونےکی وجہ سے ویرانی کی علامت بن گئے ہیں۔ اسپتال کے علاوہ عملے کے لئے رہائشی مکانات ، لیباریوٹری، مردہ گھر ، اندرونی مریضوں کے لئے مختص کمرے سمیت کئی عمارتیں نگرانی نہ ہونے کی وجہ سے بد نظمی کا شکار ہیں۔ یہ سب ہوتے ہوئے محکمہ صحت عامہ آخر کس کے لئے اور ایک نئی عمارت کی تعمیر کامنصوبہ بنایا جارہاہے سمجھ سے باہر ہے۔ اس سلسلے میں جن شکتی ویدیکے کے مادھونایک نے اسپتال کا دورہ کرنے کے بعد اخبارنویسوں سے بات کرتے ہوئے کہاکہ گذشتہ کئی مہینوں سے اسپتال میں ڈاکٹر نہیں ہونے سے عوام پریشان حال ہیں۔ سرکاری حکم ہے کہ ڈاکٹر اتوار کے دن کم سے کم آدھا دن رہے۔ لیکن کبھی یہاں عملہ تقرر ہوتاہے تو ان کے لئے سنیچر اور اتوار خود کی چھٹی ہوتی ہے۔ یہاں انہیں پوچھنے والا کوئی نہیں ہے۔ اگلے کچھ دنوں میں اسپتال کا نظام ٹھیک نہیں کیا گیا تو اسپتال کے سامنے ہزاروں عوام کےساتھ احتجاج کرنے کا انتباہ دیا ۔

ایک نظر اس پر بھی

ضلع شمالی کینر ا کے سرسی اور کاروارشہروں میں وقف کمیٹی کے2دفاتر

وزیر برائے تعلیمات، اقلیتی بہبود اور اوقاف جناب تنویر سیٹھ کی جانب سے کرناٹک وقف بورڈ کے چیف ایکزیکٹیو آفیسر کو بھیجے گئے مراسلے کے مطابق اب ضلع شمالی کینرا میں وقف کمیٹیوں کے 2دفاتر ہونگے جن میں سے ایک سرسی اور دوسرا دفترکاروار میں ہوگا۔ 

یلاپور میں پرائیویٹ بس اور لاری کے درمیان خطرناک ٹکر؛ 31 مسافر زخمی

لکثری بس اور لاری کے درمیان ضلع  اُترکنڑا کے یلاپور میں پیش آئے ایک سڑک حادثہ  میں بس ڈرائیور اور لاری ڈرائیور سمیت 31 مسافر  شدید زخمی ہوگئے۔ حادثہ سنیچر اور اتوار کی درمیانی شب بسگوڈا کراس نیشنل ہائی وے 66 پر پیش آیا۔

منڈگوڈ:بی جے پی پریورتن اجلاس کے دوران جیب کتروں نے دکھائی ہاتھ کی صفائی۔ایک کارکن کی جیب سے اڑائے ایک لاکھ روپے!

منڈگوڈ شہر میں منعقدہ بی جے پی اجلاس کے دوران جیب کتروں نے اپنے ہاتھ کی صفائی دکھائی اور اجلاس میں شریک ایک کارکن کی جیب سے ایک لاکھ روپے اڑانے میں کامیاب ہوگئے۔

کار اور بس کے درمیان تصادم میں1ہلاک ،4شدید زخمی

دھرمستھلا سے سبرامنیا کی طرف جاتے ہوئے اچلمپاڈی کے قریب ایک کار اور پرائیویٹ بس کے درمیان زبردست تصادم ہوا جس کے نتیجے میں ایک شخص کی موت واقع ہوگئی اور چار افراد سنگین طور پر زخمی ہوگئے ہیں۔