حاملہ خواتین اور بچوں کومقوی غذاکے بدلے نقد رقم ۔مرکزی سرکار کی اسکیم کے خلاف آنگن واڈی ملازمین کا میمورنڈم

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 12th October 2017, 9:16 PM | ساحلی خبریں |

بھٹکل 12؍اکتوبر (ایس اونیوز) پچھلے کئی برسوں سے حاملہ خواتین، زچہ اور بچے کے لئے سرکار کی طرف سے دودھ پاوڈراور تغذیہ سے بھرپور دوسری اشیاء مفت تقسیم کرنے کی اسکیم آنگن واڈی ملازمین کے توسط سے جاری ہے۔ مگر مرکزی حکومت نے اب اس نظام میں تبدیلی لاتے ہوئے براہ راست مستفضین تک غذا کے پیکیٹ اور نقد رقم بذریعہ ڈاک پہنچانے کی اسکیم اپنانے کا فیصلہ کیا ہے۔

مرکزی وزیر برائے بہبودئ خواتین و اطفال، مینکا گاندھی نے گزشتہ دنوں ایک سیمینار کے دوران اس بات کا اعلان کیا اور کہا کہ اس نئے نظام کا تجربہ فی الحال 300اضلاع میں کیا جائے گا اور اس کے بعد پورے ملک میں مرحلہ وار اس کو لاگو کیا جائے گا۔

وزیر موصوف کے اس بیان کے پس منظر میں سی آئی ٹی یو کی ذیلی تنظیم کرناٹکا راجیہ آنگن واڈی نوکررا سنگھا (رجسٹرڈ ) کی طرف سے بھٹکل اسسٹنٹ کمشنر کی معرفت وزیراعلیٰ کرناٹکا کو میمورنڈم دیا گیا اور اسے 26لاکھ آنگن واڈی ملازمین کو بے روزگاری کی طرف ڈھکیلنے کی ایک سازش قراردیا۔ میمورنڈم میں سوال اٹھائے گئے ہیں کہ تغذیہ سے بھرپور اشیاء دینے کے بجائے معمولی سی نقد رقم دینے سے کیسے مقوی غذا حاصل کی جاسکتی ہے۔ اس کے علاوہ کچھ غذاکے پیکیٹس بناکر ڈاک کے ذریعے مستفضین کو ان کے گھر پر پہنچانے کے لئے سرکار کی طرف سے مہاراشٹرا کی کمپنی کو جو 575کروڑ روپے کا ٹینڈر دیا گیا ہے ، آنگن واڈی ورکرز کی یونین نے اس کی بھی مذمت کی ہے۔اور مطالبہ کیا ہے کہ خواتین اوربچوں کے مفاد کے علاہ لاکھوں آنگن واڈی ملازمین کے روزگار کو سامنے رکھتے ہوئے مرکزی حکومت اس نئی اسکیم پر عمل درآمد کا اراداہ ترک کردے اور حسب سابق آنگن واڈی ملازمین کے توسط سے خواتین اور بچوں کے لئے ضروری غذائیں تقسیم کروانے کا سلسلہ جاری رکھے۔

اس موقع پرانگن واڑی  نوکر سنگھا کی صدر پشپائوتی نائک سمیت دیگر ذمہ داران  شانتی موگیر،   جئے لکشمی نائک، سدھا بھٹ و غیرہ موجود تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

پریش میستا قتل معاملہ کی این آئی اے سے تحقیقات کا مطالبہ، منصفانہ جانچ نہیں ہوئی تو ساحلی علاقہ جل اٹھے گا: کرنالاجے کا انتباہ

بھارتیہ جنتا پارٹی ( بی جے پی ) کی ریاستی جنرل سکریٹری ورکن پارلیمان شو بھا کرند لاجے نے خبردار کیا ہے کہ اگر ہوناور کے پریش میستا قتل کی تحقیقات ریاستی حکومت مناسب طریقہ سے نہیں کرے گی تو ساحلی علاقہ جل اٹھے گا۔

اُترکنڑا کے مختلف علاقوں میں سنگھ پریوار کے کارکنوں کے ہنگاموں سے بھٹکل میں بھی تشویش کی لہر؛ کل بدھ کو بھٹکل بندکا اعلان؛ مرڈیشورکے ایک مکان پر پتھرائو

گذشتہ کچھ دنوں سے ضلع اُترکنڑا کے مختلف شہروں میں ہورہے سنگھ پریوار کے کارکنوں کے احتجاج کے نام پر  ہنگاموں کو دیکھتے ہوئے  شہر بھٹکل کے عوام میں بھی تشویش پائی جارہی ہے، ایسے میں وہاٹس ایپ پر کنڑا کا ایک مسیج تیزی کے ساتھ وائرل ہورہا ہے جس میں بتایا گیا ہے کہ کل بدھ کو بھٹکل، ...

ہوناور میں لاپتہ ہونے والا سرسی کا نوجوان زندہ سلامت مل گیا؛ چار روز تک پاگلوں کی طرح جنگل کی خاک چھانتا رہا

چار روز قبل جمعہ کے دن ہوناور کے ہاڈین بال میں شرپسندوں کے حملوں کے بعد لاپتہ ہونے والا سرسی کا نوجوان آج ہوناور کے جنگل میں زندہ سلامت مل گیا، جس کے ساتھ ہی اُن کے گھر پر رونق لوٹ آئی اور گھروالوں سمیت مقامی لوگوں نے اللہ کا شکر بجالیا۔

کیا ہوناور،کمٹہ اور کاروار کے وُکلا نے مسلم گرفتارشدگان کے معاملات کی پیروی نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے ؟

ہوناورمیں گذشتہ روز ایک نوجوان کی لاش قریبی تالاب سے برآمد ہونے کے بعدمسلمانوں کو اُس کے قتل کا ذمہ دار ٹہراتے ہوئے  نہ صرف ہوناور بلکہ کمٹہ اور ضلع کے دیگر علاقوں میں بھی مسلمانوں کے خلاف منظم سازش کے تحت فضا تیار کی جارہی ہے اور  غیر مسلمانوں کو مسلمانوں پر حملہ کرنے کے لئے ...