شام میں مزید فوجی اڈوں کے قیام کے ایرانی منصوبے کا انکشاف

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 17th July 2017, 12:03 PM | خلیجی خبریں | عالمی خبریں |

دبئی،16جولائی(ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا)ذرائع ابلاغ نے انکشاف کیا ہے کہ ایرانی حکومت شام میں اپنے جنگجوؤں اور فوجیوں کی تعداد بڑھانے کے لیے وہاں پر مزید فوجی اڈوں کے قیام کے لیے کوشاں ہے۔اخبارالشرق الاوسط نے اپنی رپورٹ میں اسرائیلی ذرائع ابلاغ کے حوالے سے اطلاع دی ہے کہ ایرانی عسکری انتظامیہ نے شام میں اسد رجیم سے ایک فوجی اڈا حاصل کیا ہے۔ اس کے علاوہ ایرانی حکومت وسطی شام میں ایک بری فضائی اڈے کے حصول کے لیے دمشق سے بات چیت کررہی ہے۔ اس مجوزہ فوجی اڈے پر ایران کی حمایت یافتہ ملیشیاؤں کے جنگجوؤں کو تعینات کیا جائے گا۔اسرائیل کے عسکری ذرائع کا کہنا ہے کہ وسطی شام میں قائم کردہ فوجی اور ہوائی اڈوں میں پاکستان، افغانستان سے لائے گئے اجرتی قاتلوں اور پاسداران انقلاب کے اہلکاروں سمیت پانچ ہزار جنگجوؤں کو تعینات کیا جائے گا جو کسی بھی ہنگامی حالت میں بشارالاسد کے دفاع میں لڑائی میں حصہ لیں گے۔مغربی ذرائع ابلاغ کے مطابق ایران طرطوس بندرگاہ کے حصول کے لیے بھی کوشاں ہے تاکہ اسے ایک بحریہ کے اڈے کے طورپر استعمال کیا جاسکے۔مبصرین کا کہنا ہے کہ تہران دمشق کے ساتھ عسکری تعاون کے ساتھ ساتھ شام میں اپنے مستقل اڈوں کے قیام کے لیے کوشاں رہا ہے۔ شام میں حکومت کے خلاف شروع ہونے والی بغاوت کی تحریک کے آغاز ہی سے ایران نے اپنے عسکری مشیر دمشق روانہ کردیے تھے۔ اس کے بعد باغیوں کی تحریک کچلنے کے لیے ایران اور بشارالاسد حکومت کے درمیان مادی، معنوی، لاجسٹک اور عسکری تعاون میں اضافہ ہوتا رہا ہے۔ یہاں تک کہ ایران نے پاکستان، افغانستان اور دوسرے ملکوں سے اجرتی قاتل بھرتی کرکے شام بھیجنے شروع کیے۔ لبنانی شیعہ ملیشیا حزب اللہ کو دمشق کیدفاع میں استعمال کیا گیا۔ اسرائیلی ذرائع ابلاغ کے مطابق صرف حزب اللہ شام کی جنگ میں جھونکے اپنے جنگجوؤں پر سالانہ 800 ملین ڈالر کی رقم خرچ کرتی رہی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

شارجہ میں ابناء علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کی خوبصورت تقریب؛ یونیورسٹی میں میڈیکل تعلیم صرف 60 ہزار میں ممکن!

علی گڈھ مسلم یونیورسٹی جسے بابائے قوم مرحوم سر سید احمد خان نے دو سو سال قبل قائم کیا تھا آج تناور درخت کی شکل میں ملک میں تعلیم کی روشنی عام کررہا ہے۔اس یونیورسٹی میں میڈیکل کے طلبا کے لئے پانچ سال کی تعلیمی فیس صرف 60,000 روپئے ہے، حالانکہ دوسری یونیورسیٹیوں میں میڈیکل کے طلبا ...

متحدہ عرب امارات میں حفظ قرآن جرم، حکومت کی منظوری کے بغیر کوئی شخص قرآن حفظ نہیں کرسکتا، مساجد میں مذہبی تعلیم اور اجتماع پر بھی پابندی

مشرقی وسطیٰ کے مختلف ممالک میں داخل اندازی اور عرب کی اسلامی تنظیموں کو دہشت گرد قرار دینے کے بعد متحدہ عرب امارات قانون کے ایسے مسودہ پر کام کررہا ہے جس کی رو سے حکومت کی منظوری کے بغیر قرآن شریف کا حفظ بھی غیرقانونی ہوگا۔

سعودیہ میں مقیم غیر قانونی تارکین وطن میں سب سے زیادہ تعداد پاکستانیوں کی نکلی

سعودی عرب کی وزارت داخلہ کے ترجمان میجر جنرل منصور الترکی نے واضح کیا ہے کہ اقامہ و محنت قوانین اور سرحدی سلامتی کے ضوابط کی خلاف ورزی کرنے والے 140 مما لک کے 758570 غیر ملکیوں نے شاہی مہلت سے فائدہ اٹھایا۔