کرناٹک کے ساحلی علاقہ میں فرقہ وارانہ فساد پر آل انڈیا ملی کونسل کا اظہار تشویش

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 13th July 2017, 11:11 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،12؍جولائی (ایس او نیوز) حال ہی میں کرناٹک کے ساحلی علاقہ میں ہوئے فرقہ وارانہ فساد پر آل انڈیا ملی کونسل نے تشویش کا اظہار کیا ہے۔ ملک اور ریاست کے موجودہ حالات پرغوروخوص کیلئے بنگلورومیں ملی کونسل کا اجلاس منعقد ہوا۔ کرناٹک کے ساحلی علاقہ بنٹوال میں حال ہی میں قتل کےواقعات اورفرقہ وارانہ فسادات پرایک جانب بی جے پی اورکانگریس کے درمیان سیاست، بیان بازی کا سلسلہ جاری ہے تو دوسری طرف ملی اور سماجی تنظیمیں تشویش کا اظہارکررہی ہیں۔

بنگلورومیں کرناٹک کے امیرشریعت مفتی اشرف علی کی صدارت میں آل انڈیا ملی کونسل کا اجلاس منعقد ہوا۔ ریاست کے امیر شریعت نے تمام طبقوں سے امن اوراتحاد برقراررکھنے کی اپیل کی۔ کرناٹک مسلم لیجسلیچرس فورم کے سکریٹری عبدالجبار نے اس موقع پر کہا کہ جگہ جگہ مختلف مذاہب کےنوجوانوں پرمشتمل امن اسکواڈ تشکیل دینےکی ضرورت ہے ۔ ان امن اسکواڈ کے قیام کیلئےمسلم طبقہ پہل کرے ۔ مذہب اسلام امن اورانسانیت کا درس دیتا ہے ۔

اجلاس میں کہا گیا کہ کرناٹک میں اسمبلی انتخابات قریب آ رہے ہیں، اسی لیے چند طاقتیں لوگوں کو مذہب اور فرقوں کی بنیاد پرتقسیم کرنے کی کوشش کررہی ہیں۔ خاص طور پراقلیتی طبقہ کے نوجوانوں کواکسانے کی کوشش کی جارہی ہے۔ عوام کوچاہئے کہ وہ ایسی طاقتوں کےخلاف چوکنا رہیں۔

اجلاس میں ڈاکٹرمنظورعالم نے کہا کہ مختلف طبقوں میں اتحاد کومضبوط کرنے اوراقلیتوں کے مسائل کواُجاگر کرنے کیلئے اسی ماہ کی 30 تاریخ کو ملی کونسل کے تحت قومی کنونشن منعقد ہو رہا ہے۔ نئی دہلی میں ہونے والے اس کنونشن کا عنوان ’ دستور بچاؤ ۔ ملک بناؤ ‘ ہوگا۔

ایک نظر اس پر بھی

جے ڈی ایس ،بی جے پی کی مدد کر رہی ہے ، مودی نہیں بلکہ سدرامیا کھیل کو حقیقی طورپر تبدیل کرنے والے ہیں: کے سی وینوگوپال

اے آئی سی سی کے جنرل سکریٹری و انچارج کرناٹک کے سی وینوگوپال نے کہا ہے کہ جے ڈی ایس کی 12مئی کو ہونے والے انتخابات میں موجودگی صرف کانگریس کے ووٹوں کی تقسیم ہے اور ایچ ڈی دیوے گوڑا کی زیرقیادت پارٹی کا واحد نکاتی ایجنڈہ سدرامیا کو شکست دینا اور بی جے پی کی مدد کرنا ہے ۔