ہندی میں خطاب کرنے اب میدان میں اُترے گی ممتا بینرجی؛ کیا ان کا اُترنا وزیراعظم مودی کیلئے خطرے کی گھنٹی تو نہیں ؟

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 29th December 2016, 3:08 PM | ملکی خبریں | اسپیشل رپورٹس |

کولکاتا 28؍دسمبر(ایجنسی) نوٹ بندی کی وجہ سے پیدا شدہ کرنسی بحران کے بعد مرکزی حکومت کے خلاف مورچہ کھولنے والی ممتا بنرجی اب ہندی بیلٹوں میں وزیر اعظم مودی کا مقابلہ کرنے کیلئے کمرکستی ہوئی نظر آرہی ہیں اور اخباری رپورٹوں پر بھروسہ کریں تو ممتا بینرجی اب ہندی زبان پر عبور حاصل کرنے کی کوشش کررہی ہیں ۔

ذرائع سے ملی خبر کے مطابق دارجلنگ میں نیپالی اور مدنی پور میں سنتھالی زبان بول کرعوام کا دل جیتنے والی ممتا بنرجی ہندی بیلٹ میں وزیر اعظم مودی کے خلاف اپنی مہم کوپراثر بنانے کیلئے ہندی زبان پر مکمل عبور حاصل کرنا چاہتی ہیں ۔اگلے عشرے میں ممتا بنرجی کرنسی بحران پر لکھنو اور پٹنہ میں عوامی ریلی سے خطاب کرنے والی ہیں ۔ ترنمول کانگریس کے ذرائع کے مطابق ممتا بنرجی اس کیلئے ایک ہندی ٹیچر کی مدد لے رہی ہیں اور اپنے ساتھ ہندی ۔بنگلہ ڈکشنری بھی ساتھ میں رکھ رہی ہیں ۔سمجھا جارہا ہے کہ اگر ممتا بنرجی ہندی میں عبور حاصل کرتے ہوئے عوامی خطاب کرنے میدان میں اُترئیں گی تو مودی کے لئے خطرے کی گھنٹی ثابت ہوں گی۔

حال ہی میں ممتا بنرجی نے اپنے ایک بیان میں کہا تھا کہ وہ 1984سے دہلی میں رہتے ہوئے آرہی ہیں ۔ممبر پارلیمنٹ ،مرکزی وزیر رہنے کی وجہ سے ہندی بولنا سیکھ لیا تھا مگر 2011میں بنگال کا وزیر اعلیٰ بننے کے بعد ہندی بولنے کی پریکٹس میں کمی آگئی ۔اس کی وجہ سے اُن کی ہندی کمزور ہوگئی۔ ترنمول کانگریس کے ذرائع کے مطابق ممتا بنرجی اپنی شاعری کی کتاب ہندی میں لارہی ہیں ۔اس سے قبل ان کا مجموعہ کلام اردو زبان میں آچکا ہے ۔اس کے علاوہ 2013میں شایع ہونے والی ممتا بنرجی کی سوانح عمری میری سنگھرس پر یاترا کا ہندی ترجمہ بھی ہورہا ہے ۔

ہندی اخبار سن مارگ کے ایڈیٹر و ترنمول کانگریس کے راجیہ سبھا ممبر وویک گپتا ممتا بنرجی کی ہندی تقریر کی تیاری میں تعاون کرتے ہیں ۔16نومبر کو ممتا بنرجی نے ہندی میں ٹویٹ کیا تھا اور اس میں دہلی کے آزاد مارکیٹ میں دہلی کے وزیر اعلیٰ اروند کجریوال کے ساتھ مشترکہ ریلی کا اعلان کیا گیا تھا ۔اس کے بعد انہوں نے اپنی کئی ٹویٹ ہندی میں کرکے وزیر اعظم مودی کی تنقید کی تھی۔ دیگر بنگالی لیڈروں کے مقابلے ممتا بنرجی کی ہندی زبان کی صلاحیت بہتر ہے اور وہ آسانی سے ہندی میں تقریر کرلیتی ہیں او ر وہ اپنی تقریروں میں علامہ اقبال کے اشعار کو بھی پڑھتی ہیں ۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل کا ایک نوجوان نو ماہ سے سعودی عربیہ کے ایک اسپتال میں ایڈمٹ؛ اسپتال کا بل ایک کروڑ روپیہ؛ سشما سوراج سے طلب کی گئی مدد

بھٹکل کا ایک نوجوان گذشتہ نو ماہ سے سعودی عربیہ کے دارالحکومت ریاض کے ایک اسپتال میں زندگی اور موت کی کشمکش میں مبتلا ہے اور بتایا گیا ہے کہ اُسے واپس بھٹکل لانے کے لئے گھر والوں کے پاس اسپتال کی فیس بھرنے کی رقم نہیں ہے جو قریب ایک کروڑ روپیہ سے تجاوز کرچکی ہے۔ اس تعلق سے خبر ...

ناراض صارفین نے بینک میں لگایا تالا

ضلع کے اسٹیٹ بینک آف انڈیا کی سہوروا شاخ میں غیر مطمئن صارفین نے بدھ کو تالا لگا دیا ہے۔وجہ یہ ہے کہ صارفین کو مطلوبہ رقم نہیں مل پا رہی ہے،بینک میں ملازمین کی کمی بھی پیسے نکالنے میں رکاوٹ بن رہی ہے،

سپریم کورٹ نے 50ہزار لوگوں کو راحت دی، ہلدوانی کی ایک کالونی میں توڑ پھوڑ پر لگائی روک

اتراکھنڈ کے ہلدوانی ریلوے اسٹیشن کے قریب رہائش پذیر 50ہزار لوگوں کو سپریم کورٹ نے بڑی راحت دی ہے۔کورٹ نے یہاں مکانوں میں انہدامی کاروائی پر روک لگا دی ہے۔سپریم کورٹ نے یہ ہدایت نینی تال ہائی کورٹ کے فیصلے پر روک لگاتے ہوئے دی ہے۔

ممبئی میونسپل انتخابات;سیٹوں کی تقسیم کو لے کر بی جے پی-شیوسینا کی میٹنگ بے نتیجہ ختم، اب 21کو فیصلہ

ممبئی میونسپل نتخابات میں نشستوں کی تقسیم کو لے کر بی جے پی-شیوسینا کے درمیان ہوئی میٹنگ بدھ کو بھی بغیر کسی فیصلے کے ختم کر دی گئی۔اس میٹنگ میں بی جے پی کی جانب سے ونود تاؤڑے، پرکاش مہتا،

مسلمانوں کے داخلی انتشار کا سد باب کون کرے؟ از:عبدالمعیدازہری

جہاں اس بات سے انکار ممکن نہیں کہ اسلام، انسانیت کی بنیاد پر اتحاد واتفاق اور رواداری کا مذہب ہے، وہیں یہ بات بھی افسوس کے ساتھ قابل یقین اور سبق آموز ہے کہ پوری دنیا کو اتحاد کی دعوت دینے والے مسلمان خود کئی فرقوں اور جماعتوں میں بٹ گئے ہیں۔

ساکشی کی دیدہ دہنی:بی جے پی کی نا معقول و ضاحت اور الیکشن کمیشن کی بے بسی تحریر:حامد اکمل

بی جے پی کے تئیں کسی سنجیدگی اور شائستگی کا حسنِ ظن رکھنا خود فریبی کے مترادف ہے۔ لیکن اس کی ایسی حرکات کو معاف کرنا یا نظر انداز کرنا تہذیب ، شائستگی اور قومی یکجہتی کو خطرے میں ڈالنا ہے۔ بی جے پی قائدین مسلمانوں اور اسلام کے بارے میں مسلسل دریدہ دہنی کرتے رہتے ہیں اسے ان کی ...

فوج کو گھٹیا کھانا، مجرم کون ہے؟ ....... تحریر: منصور عالم قاسمی(ریاض، سعودی عرب)

جموں کشمیرمیں تعین ۹۲ویں بٹالین کا جوان تیج بہادر یادو پچھلے دو دنوں سے سوشل میڈیا سے لے کر پرنٹ میڈیا تک موضوع بحث؛بی ایس ایف افسران اور سرکار کے لئے باعث ندامت و خجالت بنا ہوا ہے اور کیوں نہ ہوکہ اس نے ایک ایسی خامی کو بر سر عام کردیا ہے جس سے ملک میں شدید غم و غصہ کی لہر پائی جا ...

بھٹکل میں ایسا بھی ہوتا ہے : ذرا نم ہوتو یہ مٹی بڑی زرخیز ہے             از:قادر میراں پٹیل

 میں کسی کام سے باہر تھا گھر لوٹتےہوئے شمس الدین سرکل سے آٹو میں سوار ہوکر گھرپہنچا ۔ گھر پہنچنے کے بعد آٹو ڈرائیور سے کرایہ کے بارے میں دریافت کیا تو اس نے 40روپئے بتایاتو میں نے اس سے پوچھا کہ ابھی آدھ گھنٹہ پہلے یہاں سے وہیں گیا جہاں سے تمہارا رکشا میں نے پکڑا ہے ، اس آٹووالے ...

یوپی انتخاب: منظرنامہ پر ابھرتے نقوش ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ راحت علی صدیقی قاسمی

ہندوستان کی عظیم ریاست اتر پردیش میں انتخابی عمل کا اعلان ہوچکا،تمام سیاسی جماعتیں اور دھڑے اس صوبہ کی سیاسی اہمیت سے بھرپور واقف ہیں،ان کے علم میں ہے،یہاں فتح کا پرچم لہرانا،نمایاں مقام اور کامیابی حاصل کرنا کیا معنی رکھتا ہے،یہاں کی کامیابی دہلی کی راہیں ہموار کرتی ہے، ...

اسمبلی انتخابات میں سماجوادی کا جھگڑا اورمسلمانوں کی ذمہ داری! تحریر:ڈاکٹراسلم جاوید

آزاد ہندوستان کے سبھی انتخابات کی تاریخ بتاتی ہے کہ یہاں عین ووٹنگ کے زمانے میں خود کو سیکولر ہونے کا دعویٰ کرنے والی سیاسی جماعتیں اپنی برتری کا احسا س دلانے کیلئے ہمیشہ اقلیتوں کوکئی ٹکڑوں میں منقسم کرکے انہیں تتر بتر کرکے مفلوج کرتی رہی ہیں اور مسلمانوں کے ووٹ کو منتشر کرنے ...