محمد بن سلمان سعودی عرب کو ایک طاقتور ملک بنانا چاہتے ہیں: عادل الجبیر

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 25th January 2018, 8:47 PM | خلیجی خبریں | عالمی خبریں |

ڈیووس ،25؍جنوری (ایس او نیوز؍ آئی این ایس انڈیا ) سعودی وزیر خارجہ عادل الجبیر نے کہا ہے کہ ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان سعودی عرب کو ایک طاقتور ملک بنانا چاہتے ہیں۔وہ سوئٹزر لینڈ کے شہر ڈیووس میں منعقدہ عالمی اقتصادی فورم میں ایک کانفرنس میں گفتگو کر رہے تھے۔انھوں نے کہا کہ ’’سعودی عرب جس تیزی اور چابک دستی سے تبدیل ہو رہا ہے اور آگے بڑھ رہا ہے، ابھی دنیا اس کو ایسا دیکھنے کی عادی نہیں ہوئی ہے‘‘۔انھوں نے کہا کہ ’’بعض ناقدین سعودی عرب کو سست رفتاری سے ترقی پر تنقید کا نشانہ بناتے رہے ہیں ،مگر اب معاملہ اس کے برعکس ہو رہا ہے‘‘۔ڈیووس میں سالانہ عالمی اقتصادی فورم 23 جنوری کو شروع ہوا تھا اور یہ 26 جنوری تک جاری رہے گا۔اس مرتبہ اس کا عنوان ’’منتشر دنیا میں ایک مشترکہ مستقبل کی تعمیر ‘‘ ہے۔اس فورم میں مختلف ممالک کے سربراہان ریاست وحکومت ، وزراء4 ،اعلیٰ سرکاری عہدے دار ، دنیا بھر سے سرکاری اور نجی شعبوں سے تعلق رکھنے والے سماجی اور اقتصادی ماہرین ، میڈیا کے نمایندے،پیشہ ور حضرات اور ماہرینِ تعلیم شریک ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

یمن : حوثیوں کے لیے کام کرنے والے ایرانی جاسوس عرب اتحاد کے نشانے پر

یمن میں آئینی حکومت کو سپورٹ کرنے والے عرب اتحاد کے لڑاکا طیاروں نے تعز شہر کے مشرقی حصّے میں جاسوسی کے ایک مرکز کو نشانہ بنایا۔ اس مرکز میں ایرانی ماہرین بھی موجود ہوتے ہیں جو باغی حوثی ملیشیا کے لیے کام کرتے ہیں۔

شاہ سلمان اور صدر السیسی کے درمیان ٹیلیفونک رابطہ

سعودی عرب کے فرمانروا خادم الحرمین الشریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز آل سعود اور مصری صدر عبدالفتاح السیسی کے درمیان ٹیلیفون پر رابطہ ہوا ہے۔ اس موقع پر شاہ سلمان نے مصر کی سلامتی اور استحکام کی خواہش کا اظہار کیا ہے۔

ایران میں رواں سال تین کم سن بچوں کو پھانسی پر لٹکا دیا گیا:یو این

ایران میں کم عمر افراد کو سزائے موت دیے جانے اور ان سزاؤں پر عمل درآمد میں ماضی کی نسبت اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔ اقوام متحدہ کی طرف سے جاری کردہ ایک رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ رواں سال 2018 کے پہلے ڈیرھ ماہ میں ایران میں تین کم عمر افراد کو پھانسی دے کر موت سے ہم کنار کردیا گیا۔