مسلم خواتین کیلئے پرسنل لاء بورڈ کی ملک گیر دستخطی مہم ، طلاقِ ثلاثہ پر حکومت تک پیام پہنچانے کی حکمت عملی ، بھوپال میں اجلاس عام برائے خواتین کا انعقاد

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 12th September 2017, 3:05 PM | ملکی خبریں |

بھوپال ،11؍ستمبر(ایس او نیوز) اسلام میں خواتین کو مساوی حقوق دیئے گئے ہیں اور وہ شریعت میں خود کو انتہائی محفوظ تصور کرتی ہیں۔ آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ کے آج بھوپال میں منعقدہ اجلاس عام برائے خواتین میں یہ پیام دیا گیا اور ساتھ ہی ساتھ سپریم کورٹ و مرکزی حکومت پر دباؤ ڈالنے کے مقصد سے ملک گیر سطح پر دستخطی مہم شروع کرنے کا فیصلہ کیا گیاہے ۔ خواتین نے یہ طئے کیا ہے کہ وہ اپنے پیام کے ذریعہ حکومت تک یہ بات پہونچانا چاہتی ہیں کہ اسلام میں اُنھیں مکمل طمانیت حاصل ہے اور شریعت میں مداخلت کو وہ برداشت نہیں کریں گی ۔ مسلم پرسنل لاء بورڈ کی دستخطی مہم آج جنرل سکریٹری مولانا ولی رحمانی کی موجودگی میں شروع ہوئی ۔ اس مہم کے تحت ملک بھر میں مسلم خواتین سے دستخط حاصل کرتے ہوئے چیف جسٹس آف انڈیا دیپک مشرا اور وزیراعظم نریندر مودی کو یادداشت پیش کی گئی ہے ۔ دستخطی مہم کا اعلان ایسے وقت کیا گیا جبکہ ایک دن قبل منعقدہ عاملہ اجلاس میں طلاقِ ثلاثہ پر سپریم کورٹ کے فیصلے کا جائزہ لینے کیلئے قانونی اور مذہبی اُمور کے ماہرین پر مشتمل کمیٹی تشکیل دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ رُکن مسلم پرسنل لاء بورڈ مولانا خلیل الرحمن سجاد نعمانی نے کہاکہ ملک بھر میں پھیلائے جارہے پروپگنڈے کے خلاف یہ عملاً ریفرینڈم ہے تاکہ یہ ثابت کیا جاسکے کہ خواتین خود کو محفوظ تصور کرتی ہیں اور وہ شریعت میں مداخلت کو قبول نہیں کرتیں۔ انھوں نے کہاکہ خواتین کو اسلام میں نمایاں مقام حاصل ہے اور انھوں نے مذہب کے لئے کافی قربانیاں دی ہیں۔ اس وقت جو مذموم مہم چلائی جارہی ہے وہ خواتین کیلئے ناقابل قبول ہے۔ لہذا دستخطی مہم شروع کرتے ہوئے یہ واضح پیام دیا جائے گا کہ شریعت میں مداخلت کو برداشت نہیں کیا جائے گا ۔ مولانا نعمانی نے خواتین پر بھی زور دیا کہ وہ شریعت کے تحفظ کیلئے قربانی دیں۔ انھوں نے بتایا کہ اسلام میں خواتین نے ہمیشہ قربانی دی ہیں ۔ سرزمین مکہ پر اسلام کی خاطر سب سے پہلا خون خاتون نے بہایا ہے ۔ انھوں نے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ اتحاد کا مظاہرہ کرنا چاہئے ۔ اگر کوئی غیرمسلم ہماری شریعت کو سمجھنے سے قاصر ہے تو ہم کچھ نہیں کرسکتے لیکن ہمیں اپنی شریعت کے بارے میں باخبر رہنا چاہئے ۔ شہر قاضی اور مولانا مشتاق علی نقوی نے اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے مسلم خواتین کو اسلامی تعلیمات سے واقف کرانے پر زور دیا اور کہاکہ مسلم خاتون کو کسی مسلم مرد سے ہی نکاح کرنا چاہئے اور یہی اسلامی اُصول ہے ، اس کے ذریعہ ہم شریعت کا تحفظ کرسکتے ہیں۔ انھوں نے غیرمسلموں سے شادی نہ کرنے کی تلقین کی اور کہاکہ ایسا کرتے ہوئے ہم شریعت میں مداخلت یا اس کے ساتھ چھیڑ چھاڑ سے بچ سکتے ہیں۔ مولانا نقوی نے کہاکہ خواتین پر گھر کے کام کاج کی ذمہ داری کے علاوہ اور بھی کئی ذمہ داریاں ہیں اُنھیں اس کا احساس ہونا چاہئے ۔ ڈاکٹر اسماء زہرا رکن بورڈ نے اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے کہا کہ طلاقِ ثلاثہ کے مسئلہ پر کوئی اختلاف نہیں ہے ۔ انھوں نے دعویٰ کیا کہ اس طریقہ کار کے ذریعہ حقوق کا تحفظ کیا گیا ہے۔ اﷲ تعالیٰ نے شوہر کو طلاق کا حق دیا ہے اور ہمیں شادی کا حق دیا گیا ہے ۔ ہماری رضامندی کے بغیر شادی نہیں ہوسکتی۔ انھوں نے کہاکہ ہمیں مشتعل کرنے کی کوشش کی جارہی ہے لیکن ہمیں شریعت کا پابند ہونا چاہئے۔ اسلام میں خواتین کے ساتھ کسی طرح کی ناانصافی نہیں کی گئی ۔ آج بھوپال کے تاریخی اقبال میدان میں خواتین کی کثیرتعداد موجود تھی اور اُنھوں نے طلاقِ ثلاثہ کے بارے میں سپریم کورٹ کے حالیہ فیصلہ کے تناظر میں اتحاد کا ثبوت دیتے ہوئے یہ واضح پیام دیا کہ شریعت میں مداخلت برداشت نہیں کی جاسکتی ۔ آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ نے ملک بھر میں شرعی بیداری ریالیاں منعقد کرنے کا بھی فیصلہ کیاجس میں طلاقِ بائین کے بارے میں واضح کیاجائے گا تاکہ اس کا بکثرت استعمال نہ ہو ۔ ڈاکٹر اسماء زہرا نے کہا کہ مسلمانوں میں 97 فیصد شادیاں کامیاب ہوتی ہیں اور مسلم خواتین شریعت کے دائرے کار میں رہتے ہوئے بیحد محفوظ ہیں۔ اجلاس سے مولانا محمد رابع حسنی ندوی کے علاوہ جناب عارف مسعود نے بھی خطاب کیا۔ کنوینر مسلم پرسنل لاء بورڈ مدھیہ پردیش بورڈ شعبہ خواتین ڈاکٹر صوفیہ فاطمہ حسینی نے پروگرام کی کارروائی چلائی ۔ پروگرام میں اقبال میدان شرکاء کی کثیرتعداد کے باعث تنگ دامانی کا شکوہ کررہا تھا ۔

ایک نظر اس پر بھی

بہارمیں مورتی وسرجن پربی جے پی ،جدیومیں ٹھنی

محرم کے دن مجسمہ کابھسان نہیں کیا جانا چاہئے، مغربی بنگال حکومت کے اس حکم پروزیراعلیٰ ممتا بنرجی کی طرف سے تنقیدکی گئی ہے۔ اب اسی طرح کا حکم بہار کے وزیراعلیٰ نیتش کمار نے دیاہے۔

جتندر سنگھ نے کی جموں و کشمیر کے طلباء سے ملاقات

شمال مشرقی خطے کی ترقی کے وزیر جتیندر سنگھ نے دارالحکومت کے دورے پر آئے جموں و کشمیر کے طلبہ کے ایک گروپ کے ساتھ آج بات چیت کی اور نوجوانوں پر مرکوز مرکزی حکومت کے بہت سے اقدامات کے بارے میں تفصیل سے بتایا۔