دینک جاگرن کی 75ویں سالگرہ تقریبات کے موقع پرجاگرن فورم سے وزیر اعظم کا خطاب

Source: S.O. News Service | By Jafar Sadique Nooruddin | Published on 8th December 2018, 2:41 AM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

نئی دہلی:7/دسمبر (ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا)وزیر اعظم نریندر مودی نے آج نئی دہلی میں روزنامہ دینک جاگرن کی75ویں سالگرہ تقریبات کے موقع پر جاگرن فورم سے خطاب کیا۔تاج پیلس ہوٹل میں اس موقع پر موجود معزز سامعین سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم نے دوسرے افراد کے ساتھ خصوصیت کے ساتھ ہاکروں کو مبارکباد پیش کی، جو روز اخبار تقسیم کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ ہاکر ہر روز بہت سارے گھروں تک اخبار کو پہنچانے میں مدد کرتیہیں۔وزیر اعظم نے کہا کہ دینک جاگرن نے بیداری پیدا کرنے اور ملک کی تعمیرِ نومیں اہم کردار ادا کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ان کے اپنے تجربہ کی بنیاد پر دینک جاگرن نے ملک اور سماج میں تبدیلی لانے سے متعلق تحریک کو مستحکم کیا ہے۔ اس پس منظر میں انہوں نے بیٹی بچاؤ۔بیٹی پڑھاؤ اور سووچھ بھارت ابھیان جیسے پہل کا ذکر کیا۔ وزیر اعظم نے زور دے کر کہا کہ ڈجیٹل انقلاب سے میڈیا، ملک کو مستحکم کرنے میں مدد کرے گا۔وزیر اعظم نے کہا کہ ‘‘منیمم گورنمنٹ، میکسی مم گوورننس’’ اور ‘‘سب کا ساتھ، سب کا وکاس’’ نئے بھارت کے لیے بنیاد بنے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ آج نوجوان یہ محسوس کرتے ہیں کہ وہ ملک کے ترقیاتی عمل میں حصہ دار ہیں۔انہوں نے یہ سوال کیاہے کہ آزادی کی اتنی دہائیوں کے بعد بھی ہمارا ملک اتنا پچھڑا ہوا کیوں ہے؟ انہوں نے یہ بھی سوال کیا کہ ہمارے عوام کے مسائل کیوں حل نہیں ہوسکتے؟ انہوں نے کہا کہ بجلی آج ان مقامات تک پہنچ رہی ہے جہاں 70 سال تک نہیں پہنچی تھی اور وہ ریاستیں جو ریلویز سے جڑی ہوئی نہیں تھیں، انہیں ریلوے کے نقشہ پر لایا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ اس مدت کے دوران دیہی گھروں میں بیت الخلاء کی تعداد 38 فیصد سے بڑھ کر 95 فیصد تک پہنچ گئی ہے۔دیہی کنکٹی ویٹی بھی 55 فیصد سے بڑھ کر 90 فیصد تک پہنچ گئی ہے۔ایل پی جی کنکشن، کل گھروں کے 55 فیصد سے بڑھ کر 99 فیصد تک پہنچ گیا ہے۔بجلی ،دیہی کنبوں کے 95 فیصد تک پہنچ گئی ہے جبکہ چار سال قبل یہ صرف 70 فیصد کنبوں تک پہنچی تھی۔چار سال قبل تک صرف 50 فیصد افراد کے بینک کھاتے تھے جبکہ اب تقریباً ہر شخص کو بینکنگ خدمات تک رسائی حاصل ہے۔2014 میں صرف چار کروڑ افراد نے اپنا ٹیکس ریٹرن داخل کیا تھا اور آئندہ چار برسوں کے دوران تین کروڑ سے زائد افراد ٹیکس کے دائرے میں آئے۔وزیر اعظم نے کہا کہ دوسری چیزیں ویسی ہی کی ویسی ہیں۔ یہ تبدیلی کیسے آئی ہے؟انہوں نے کہا کہ غریبوں اور محروم افراد کو ایک بار جب بنیادی سہولیات حاصل ہوجاتی ہیں تو وہ خود غریبی پر قابو پالیں گے۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ چار برسوں کے دوران یہ تبدیلی رونما ہوتی ہوئی دیکھی گئی ہے اور اعداد شمار اس کے ثبوت ہیں۔وزیر اعظم نے زور دے کر کہا کہ حکومت عوام کی خواہشات کی تکمیل کرنا چاہتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان جس ٹکنالوجی کا استعمال کررہا ہے اور ترقی پذیر ممالک کے لیے ماڈل بنتا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ٹکنالوجی اور انسانی حساسیت کا امتزاج ‘‘ایز ا?ف لیونگ’’ کو یقینی بنا رہا ہے۔ انہوں نے آبی راہداری اور ہوائی سفر میں ملک نے جو جست لگائی ہے، اس کا ذکر کیا۔ انہوں نے کہا کہ ایل پی جی سلینڈروں کی ری فیلنگ کی مدت میں کمی آئی ہے۔ انکم ٹیکس ریفنڈ اور پاسپورٹ وغیرہ کے لیے انتظار کی مدت میں بھی کمی آئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت ان لوگوں تک پہنچ رہی ہے، جنہیں پی ایم آواس یوجنا، اجولا، سوبھاگیہ وغیرہ اسکیموں کے فوائد کی ضرورت ہے۔ انہوں نے آیوشمان بھارت یوجنا کا بھی ذکر کیا۔انہوں نے کہا کہ ایسی اسکیموں کے استفادہ کنندگان میں مزدور، کارکنان اور کسان وغیرہ شامل ہیں۔ انہوں نے کہا کہ غریبوں کو بااختیار بنانے کی تحریک کو مزید آگے تک لے جایا جائے گا۔ دنیا اس ترقی کو دیکھ رہی ہے۔وزیر اعظم نے کہا کہ ہندوستان نے اس بات کو یقینی بنانے بین الاقوامی برادری کے سامنے تجویز پیش کی ہے کہ معاشی مجرمین کو کہیں بھی جائے پناہ نہ ملے۔

ایک نظر اس پر بھی

جے پی سی سے جانچ کرانے کا راستہ ا بھی کھلا ہے، عام آدمی پارٹی نے کہا،عوام کی عدالت اورپارلیمنٹ میں جواب دیناہوگا،بدعنوانی کے الزام پرقائم

آپ کے راجیہ سبھا رکن سنجے سنگھ نے کہا ہے کہ رافیل معاملے میں جمعہ کو آئے سپریم کورٹ کے فیصلے کے باوجود متحدہ پارلیمانی کمیٹی (جے پی سی) سے اس معاملے کی جانچ پڑتال کرنے کا اراستہ اب بھی کھلا ہے۔

رافیل پر سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد ، راہل گاندھی معافی مانگیں: بی جے پی

فرانس سے 36 لڑاکا طیارے کی خریداری کے معاملے میں بدعنوانی کے الزامات پر سپریم کورٹ کی کلین چٹ ملنے کے بعد کانگریس پر نشانہ لگاتے ہوئے بی جے پی نے جمعہ کو کہا کہ کانگریس پارٹی اور اس کے چیئرمین راہل گاندھی ملک کو گمراہ کرنے کیلئے معافی مانگیں۔

بھٹکل کے مرڈیشور میں دو لوگوں پر حملے کی پولس تھانہ میں دو الگ الگ شکایتیں

تعلقہ کے مرڈیشور میں کل جمعرات کو  دو لوگوں پر حملہ اور پھر جوابی حملہ کے تعلق سے آج مرڈیشور تھانہ میں دو الگ الگ شکایتیں درج کی گئی ہیں اور پولس نے دونوں پارٹیوں کی شکایت درج کرتے ہوئے چھان بین شروع کردی ہے۔

مرڈیشور میں غیر ضروری بات کو لے کر ماحول خراب کرنے کی کوشش؛ سری رام سینا لیڈر اسپتال میں داخل

تعلقہ کے مرڈیشور میں  سری رام سینا  ضلعی صدر مسلم نوجوانوں سے اُلجھنے کے بعد زخمی ہو کر سرکاری اسپتال میں داخل ہونے کی واردات پیش آئی ہے، جس کے بعد سوشیل میڈیا پر زخمی شخص  کے فوٹو کے ساتھ مسیجس پھیلاکر عوام میں انتشار پیدا کرنے کی کوشش ہورہی ہے۔

گوا کے افسران نے10لاکھ روپے مالیت کی مچھلیاں برباد کردیں۔کاروار کے مچھلی فروش کا الزام

ضلع شمالی کینرا کے ماہی گیروں کے لیڈر نے الزام لگایا ہے کہ گواحکومت انتقامی کارروائی کی راہ اپناتے ہوئے تمام قانونی تقاضے پورے کرنے کے بعدبھی کرناٹکا سے گوا میں لے جائی مچھلیوں کوتباہ کررہی ہے۔

منگلورومیں نوجوان کو اغوا کرکے تاوان وصول کرنے والے نکلے منشیات فروش۔ 2.89لاکھ روپے مالیت کی اشیاء ضبط

چند دن پہلے فالنیر علاقے سے شماق نامی نوجوان کو اغوا کرنے اور بعد میں 50ہزار روپے تاوان وصول کرکے چھوڑنے والے کے الزام میں گرفتار کیے گئے گوتم(۲۸سال) اور لوئی ویگس (۲۶سال)کے بارے میں معلوم ہوا ہے کہ وہ منشیات فروشی کے دھندے میں ملوث ہیں۔