بلنڈور تالاب کی حفاظت میں لاپروائی کا الزام، حکومت اور بی بی ایم پی 50اور 25 کروڑ کا جرمانہ

Source: S.O. News Service | By Jafar Sadique Nooruddin | Published on 7th December 2018, 1:13 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو:6/دسمبر (ایس او نیوز)  مضافات شہر بلنڈور تالاب میں بڑھتی ہوئی آلودگی وقتاً فوقتاً اس تالاب سے بدبو دار جھاگ خارج ہونے اور تالاب میں آگ لگنے کے واقعات سے نپٹنے میں ریاستی حکومت اور برہت بنگلور مہانگر پالیکے کی بارہا ناکامیوں پر سخت کارروائی کرتے ہوئے آج نیشنل گرین ٹریبونل نے ریاستی حکومت پر 50کروڑ روپے اور بی بی ایم پی پر 25کروڑ روپیوں کا جرمانہ عائد کیا اور ہدایت دی کہ حکومت اور بی بی ایم پی یہ رقم آلودگی کنٹرول بورڈ کو ادا کریں۔ نیشنل گرین ٹریبونل نے ہدایت دی کہ بلنڈور تالاب کی دیکھ بھال کے لئے پانچ سو کروڑ روپیوں کا ایک ریزرو فنڈ قائم کیا جائے۔ نیشنل گرین ٹریبونل کے چیرمین جسٹس این گوپال نے آج اس معاملے پر دائر عرضی کی سماعت مکمل کرنے کے بعد فیصلہ سناتے ہوئے کہاکہ بلنڈور تالاب کے پاس جتنے بھی غیر قانونی قبضے ہیں فوری طور پر انہیں خالی کرایا جائے۔ تالاب میں آلودگی کے پھیلاؤ کو روکنے میں ناکام بی بی ایم پی افسرآئندہ اس طرح کی لاپروائی برتنے نہ پائیں اس کے لئے کارروائی کی جائے۔ بلنڈور تالاب کی حفاظت کے سلسلے میں اعلیٰ اختیاری کمیٹی نے جو سفارشات کی ہیں ان تمام کو من وعن لاگو کیا جائے ۔ ٹریبونل نے بارہا لاپروائی کے لئے بی بی ایم پی افسروں کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا کہ فوری طور پر تالاب کے آس پاس جو بھی غیر قانونی قبضے ہوئے ہیں ان کو ہٹانے کے ساتھ یہ بھی یقینی بنایا جائے کہ آلودہ پانی تالاب میں نہ بہنے پائے۔تالاب کے آس پاس موجود صنعتوں کے ذریعے بہائے جانے والے کیمیکل پانی میں گھل جانے کی وجہ سے بارہا تالاب میں آگ لگتی ہے۔ جس کی وجہ سے تالاب کے آس پاس کا ماحول بھی پراگندہ ہورہاہے۔ اسی لئے فوری طور پر بی بی ایم پی اور ریاستی حکومت یہ یقینی بنائیں کہ اس تالاب میں کیمیکل کا بہا ؤ بند کیا جائے اور اس کے لئے ذمہ دار کارخانوں کے خلاف بھی کارروائی کی جائے۔ تالاب سے بارہا جھاگ نکلنے اور آس پاس کی سڑکوں پر جمع ہوجانے کی شکایت کا بھی ٹریبونل نے سخت نوٹس لیا اور ہدایت دی کہ آئندہ ایسی صورتحال پیدا نہ ہونے پائے اس کے لئے ماہرین کی مدد لے کر کارروائی کی جائے۔ 

ایک نظر اس پر بھی

توہم پرستی کے مخالفین کومذہب دشمن قراردیاجارہاہے: ملیکارجن کھرگے

پارلیمان میں کانگریسی رہنما ملیکارجن کھرگے نے کہاکہ آج سماج میں توہم پرستی کی مخالفت کرنے والوں کومذہب کے دشمن کے طورپر پیش کیاجارہاہے ،یہاں کونڈجی بسپاہال میں اکھل بھارت شرن ساہتیہ پریشد اورماچی دیواسمیتی کی جانب سے اشوک دوملور کی تین مختلف زبانوں میں تحریرکردہ کتابوں ...

22دسمبر کو کابینہ میں ضرور توسیع ہوگی: دنیش گنڈو راؤ

پردیش کانگریس کمیٹی ( کے پی سی سی ) صدر دنیش گنڈو راؤ نے بتایا کہ 22دسمبر کوریاستی کابینہ میں توسیع ضرور ہوگی۔کے پی سی سی دفتر میں نامہ نگاروں سے انہوں نے کہا کہ کابینہ میں توسیع سے متعلق وزیراعلیٰ ایچ ڈی کمار سوامی ،نائب وزیراعلیٰ ڈاکٹر جی پرمیشور سمیت دونوں پارٹیوں کے لیڈروں ...

بی جے پی الزام عائد کرنے سے پہلے سی اے جی رپورٹ کاجائزہ لے: سدرشن

کے پی سی سی نائب صدر قانون سازکونسل کے سابق چیرمین وی آر سدرشن نے کہاکہ بی جے پی رہنما ؤں کو سابق وزیراعلیٰ سدارامیا کے دورمیں 35ہزار کروڑ روپئے کاگھپلہ ہونے کالزام لگانے سے پہلے سی اے جی رپورٹ کاجائزہ لینا چاہئے ۔

بلگام :پروفیسر خواجہ فرازؔبادامی کو  کرناٹکا یونیورسٹی دھارواڑ سے فن عروض کے موضوع پر پی ایچ ڈی کی سند تفویض  

گوکاک  جے ایس ایس ڈگری کالج کے شعبہ اردو کے صدر پروفیسر خواجہ بندہ نواز انڈیکر فرازؔبادامی کو کرناٹکا یونیورسٹی دھارواڑ کی طرف سے  ’’اردو عروض اور ہندی پنگل کا تقابلی مطالعہ ‘‘کے موضوع پر ڈاکٹر آف فلاسفی (پی ایچ ڈی ) کی سند تفویض کی گئی ہے۔

بنگلور میں منعقدہ APCR کارگاہ میں دہشت گردی کے نام پر بے گناہوں کی گرفتاریوں پر سخت تشویش؛سابق چیف جسٹس اور معروف وُکلا نے کی، یو اے پی اے کی سخت مخالفت

اسوسی ایشن فور پروٹیکشن آف سیول رائٹس (اے پی سی آر) کرناٹک چاپٹر کے زیراہتمام ریاستی سطح کے ورکشاپ میں دہشت گردی کے نام پر بے گناہ مسلمانوں کی گرفتاریوں پر سخت تشویش کااظہار کیا گیا اور سابق چیف جسٹس آف انڈیا مسٹر وینکٹ چلیّا سمیت معروف وُکلاء نے یو اے پی اے اسپیشل قانون کی سخت ...