آدھارکارڈکی لازمیت کے خلاف درخواست پر 27جون کوہوگی سماعت

Source: S.O. News Service | Published on 19th May 2017, 10:11 PM | خلیجی خبریں |

نئی دہلی19مئی(ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا)سرکاری اسکیموں کے فائدے کے لئے آدھارکارڈکو لازمی بنائے جانے کی اطلاع پر عبوری روک لگانے کامطالبہ کرنے والی عرضی پرسماعت27جون کو ہوگی۔سپریم کورٹ نے کہا کہ اس معاملے میں داخل ساری عرضیوں پر ایک ہی بار سماعت ہونی چاہئے کیونکہ سب میں ایک جیسی ہی مطالبہ کیاگیاہے۔اگرچہ اس موقع پر مرکزی حکومت نے سماعت کی جم کرمخالفت کی۔اٹارنی جنرل مکل روہتگی نے کہا کہ پہلے ہی معاملے کی سماعت آئینی بینچ کررہی ہے تاکہ دو ججوں کی بنچ کو سماعت نہیں کرنی چاہئے۔ویسے بھی 125 کروڑ میں سے 110کروڑ لوگوں کاآدھار کارڈبن چکاہے۔جبکہ درخواست گزار کی جانب سے کہا گیا کہ سرکاری اسکیموں میں 30جون کی ڈیڈ لائن ہے اس لیے اس کی پہلے ہی سماعت ہونی چاہئے۔سینئر وکیل شیام دیوان نے کہاکہ یہ سنگین معاملہ ہے اوراس پرجلدسماعت ہونی چاہئے۔سرکاری اسکیموں کے فائدے کے لئے آدھارکارڈکولازمی بنائے جانے کی اطلاع پرعبوری روک لگانے کا مطالبہ والی درخواست پر سپریم کورٹ نے سماعت کی۔نیشنل کمیشن فار پروٹیکشن آف چلڈرن رائٹ یعنی NCPCRکی سابق کمشنر شانتا چڑا کی عرضی میں کہاگیاہے کہ مرکزی حکومت مڈ ڈے میل، ٹھیکہ مزدوروں اور رائٹ ٹو ایجوکیشن اور اسکالر شپ وغیرہ فلاحی منصوبوں میں آدھارکارڈکو لازمی کرنے کانوٹیفکیشن جاری کیاگیاہے۔یہ سپریم کورٹ کے احکامات کے برعکس ہے تو ان کے نوٹیفکیشن پرعبوری روک لگنی چاہئے۔
 

ایک نظر اس پر بھی

شیخ خلیفہ ایکسلینس ایوارڈ 2018 ۔ تُمبے گروپ کو ملے 4 ایوارڈز

دبئی میں قائم جنوبی کینرا کے معروف کاروباری تُمبے گروپ کو’شیخ خلیفہ ایکسلینس ایوارڈ 2018‘کے تحت جملہ 4ایوارڈز سے نوازا گیا ۔ اس طرح ایک ہی سال میں چار ایوارڈ پانے کا اعزاز اس ایوارڈ کی تاریخ میں پہلی بار تُمبے گروپ کو حاصل ہوا ہے۔

یمن : حوثیوں کے لیے کام کرنے والے ایرانی جاسوس عرب اتحاد کے نشانے پر

یمن میں آئینی حکومت کو سپورٹ کرنے والے عرب اتحاد کے لڑاکا طیاروں نے تعز شہر کے مشرقی حصّے میں جاسوسی کے ایک مرکز کو نشانہ بنایا۔ اس مرکز میں ایرانی ماہرین بھی موجود ہوتے ہیں جو باغی حوثی ملیشیا کے لیے کام کرتے ہیں۔

شاہ سلمان اور صدر السیسی کے درمیان ٹیلیفونک رابطہ

سعودی عرب کے فرمانروا خادم الحرمین الشریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز آل سعود اور مصری صدر عبدالفتاح السیسی کے درمیان ٹیلیفون پر رابطہ ہوا ہے۔ اس موقع پر شاہ سلمان نے مصر کی سلامتی اور استحکام کی خواہش کا اظہار کیا ہے۔