ضلع شمالی کینرا کی 6نشستوں کا انتخابی انجام بالیگا کالج کے اسٹرانگ روم میں مقید !

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 13th May 2018, 8:11 PM | ساحلی خبریں |

کمٹہ 13؍مئی (ایس اونیوز) ریاستی اسمبلی انتخابات میں پولنگ کا مرحلہ ختم ہونے کے بعد امیدوار بڑھتی ہوئی دل کی دھڑکنوں کے ساتھ نتائج کے انتظار میں بے قرار بیٹھے ہیں۔ 

ضلع شمالی کینرا کی 6نشستوں پر انتخاب لڑنے والے امیدواروں کے نتائج کو اپنے اندر چھپائے رکھنے والی ووٹنگ مشینوں کو کمٹہ کے ڈاکٹر اے وی بالیگا کالج کے اسٹرانگ روم میں قید کردیا گیا ہے اور باہر سے پولیس کا سخت پہرہ لگادیا گیا ہے۔کمپاؤنڈ کی دیواروں پر باڑھ لگادی گئی ہے اور مین گیٹ سے بغیر خصوصی اجازت کے کسی کو بھی اندر جانے کی اجازت نہیں ہے۔کالج کے اطراف میں نگرانی کے لئے پولیس کے علاوہ نیم فوجی دستوں کو بھی تعینات کیا گیا ہے۔ تمام امیدوار 15مئی کا سورج نکلنے اور ووٹنگ مشین کے اندر چھپے ہوئے ووٹوں کا کرشمہ دیکھنے کے لئے بے چین ہیں۔یوں کہیں تو بے جا نہ ہوگا کہ ان ووٹنگ مشینوں میں امیدواروں کا مستقبل بندہے جس سے ان کی نیندیں حرام ہوگئی ہیں۔کیونکہ اس بار یہاں پر جو الیکشن ہوا ہے اس میں امیدواروں کے درمیان زبردست مقابلہ دیکھنے کو ملا ہے۔ اس لئے جیتنے اور ہارنے والے امیدواروں کے بیچ ووٹوں کا فرق بہت زیادہ ہونے کی امید کم ہی ہے۔یہی وجہ کے عوام بھی یہ دیکھنے کے لئے بے قرار ہیں کہ کس کے گلے میں جیت کی وجہ سے پھولوں کی مالا پڑے گی اور کسے ہار کی وجہ سے شرمسار ہوناپڑے گا۔

سب سے اہم بات یہ ہے کہ یہاں کی تقریباً تمام نشستوں پر بی جے پی اور کانگریس کے درمیان ہی راست مقابلہ دیکھنے کو ملا ہے۔ دونوں پارٹیوں کے امیدوار اقلیتوں کے ووٹوں کی وجہ سے اپنے نتائج متاثر ہونے کا حساب و کتاب جوڑ رہے ہیں۔ اقلیتی علاقوں میں پولنگ کی شرح کو سامنے رکھتے ہوئے بی جے پی کی طرف سے اپنی جیت اور ہار کے بارے میں اندازہ لگایا جارہا ہے۔ جیسے بھٹکل کے شہری علاقے میں 49حلقے ایسے ہیں جہاں اقلیتوں کے ووٹ بہت زیادہ ہیں ، اسے سامنے رکھ کر بی جے پی والے اندازہ لگارہے ہیں کہ ان پولنگ اسٹیشنوں میں اقلیتوں کی طرف سے 50فیصد سے اگر کم پولنگ ہوتی ہے تو ا س کا بالواسطہ فائدہ بی جے پی کو ہوگا۔ اورکانگریس کی طرف سے یہ حساب لگایا جارہا ہے کہ اگر یہ شرح 50فیصد سے آگے نکلتی ہے تو پھراس کے لئے جیت کی راہ آسان ہوجائے گی۔اس طرح ہر علاقے میں سیاسی پنڈت اپنے اپنے طور پر حساب لگانے اور نتائج کی پیش گوئی کرنے میں مصروف ہیں ، جبکہ بالیگا کالج کے کمرے میں قید الیکٹرانک ووٹنگ مشینیں تمام راز اپنے اندر چھپائے بیٹھی ہیں کہ 15مئی کی صبح ہوتو پھر سب کا کچا چٹھا کھول کر رکھ دیں گی۔

ایک نظر اس پر بھی

محکمہ جنگلات کی جانب سے ہونے والی ہراسانیوں کے خلاف 23فروری کو سرسی میں ہوگا سی سی ایف دفتر کا محاصرہ

جنگلاتی زمین پر رہائش پزیر افراد کے لئے حقوق فراہم کرنے والے قوانین کی خلاف ورزی کرنے اور بار بار جنگلاتی زمین پر مکانات یا باغاغبانی کرکے زندگی گزارنے والوں پر محکمہ جنگلات کے افسران کی ہراسانی کے خلاف 23فروری کو سرسی میں واقع چیف کنزرویٹر آف فاریسٹ (سی سی ایف) دفتر کا محاصرہ ...

منگلورو سٹی مال کے فوڈ شاپ میں معمولی آتشزدگی؛ فوری طور پر پایا گیا آگ پر قابو؛ معمولی نقصان

منگلورو سٹی مال کی ایک فوڈ شاپ میں آگ لگنے پر تھوڑی دیر کے لئے افراتفری کا ماحول پیدا ہوگیا۔ مگرپانڈیشور علاقے سے فائر بریگیڈ کے افسران نے موقع پر پہنچ کر جلد ہی آگ پر قابو پالیا ۔

مینگلور اور اُڈپی میں پولس افسران کے تبادلے؛ نیشا جیمس اب اُڈپی کی نئی ایس پی اور سندیپ پاٹل مینگلور کے نئے پولس کمشنر

پارلیمانی انتخابات کو لے کر ریاستی حکومت کی جانب سے بڑے پیمانے پر اعلیٰ آفسران کے تبادلے جاری ہیں، اسی مناسبت سے اب اُڈپی اور مینگلور میں اعلیٰ آفسران کے تبادلے کئے گئے ہیں۔

ہوناور: ہیسکام کے افسران راستہ بھٹک گئے۔ پوری رات جنگل میں گزارنے پر ہوئے مجبور

گیر سوپّا ڈیم کے علاقے میں گھنے جنگل سے گزرنے والی 33کے وی بجلی لائن کا معائنہ کرنے کے لئے نکلی ہوئی ہیسکام افسران اور عملے پر مشتمل ایک ٹیم میں شامل دوافسران جنگل میں راستہ بھٹک گئے جس کی وجہ سے انہیں پوری رات جنگل ہی میں گزارنی پڑی ۔