کرناٹک سے 5938فرزندان توحید سفر حج کیلئے منتخب

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 21st January 2018, 1:27 PM | ریاستی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

بنگلورو،20؍جنوری(ایس او نیوز) ریاستی وزیراعلیٰ سدارامیا نے کہاکہ ہرمذہب رحم دلی، ایثار وقربانی اور انسانوں کے ساتھ میل ملاپ اور باہمی ہم آہنگی کا ہی درس دیتاہے۔ اس لئے سیاست میں رہتے ہوئے اپنے مذہب پر عمل کرنے میں کوئی برائی نہیں ہے۔ لیکن مذہب کے نام پر سیاست سماج، ملک اور انسانیت کے لئے ایک بڑا خطرہ ہے۔ آج یہاں ودھان سودھا کے بینکوٹ ہال میں حج2018 کی سعادت سے سرفراز ہونے والے عازمین کے قرعہ اندازی کا افتتاح کرنے کے بعد وزیراعلیٰ سدارامیا نے پیغام دیتے ہوئے کہاکہ سیاست میں ہمیں مذہب کے نام پر تفرقہ ڈالنے اور انسان کو انسان کا دشمن بنانے کی ہرگز کوشش نہیں کرنی ہے۔ انہوں نے بتایاکہ ہمارا سماج اور ہماری ریاست ہی نہیں ساری دنیا ایک ایسا باغیچہ ہے جس میں ہر رنگ اور خوشبو والے پھول ہیں۔ ہر مذہب چاہے وہ ہندو دھرم ہویا اسلام، جین یا عیسائی باہمی بھائی چارہ میل ملاپ اور محبت سے جینے کا درس دیتاہے۔ انہوں نے کہاکہ جس انسان میں یہ جذبہ نہ ہو وہ انسان بننے کے لائق نہیں۔ انہوں نے کہاکہ انسانیت کا درس ہرمذہب نے دیاہے۔ اس لئے کسی سے نفرت یا دشمنی نہ کریں۔ اس سے سماج اور ملک کا نقصان ہوتاہے۔ انہوں نے کہاکہ جس ریاست اور ملک میں ہم آہنگی نہ ہو اس ملک یا ریاست میں کبھی ترقی نہیں ہوسکتی۔ وزیر اعلیٰ سدارامیا نے آج وزیر برائے شہری ترقیات و حج آر روشن بیگ کی حج خدمات کی توصیف کرتے ہوئے بتایا کہ ان کی حج خدمات پورے ملک کیلئے مثالی ہیں اور ان کی خصوصی توجہ کے سبب شہر بنگلورو میں ملک کا عظیم الشان و خوبصورت حج بھون تعمیر ہوا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ جب انہیں اقلیتی بہبود کے قلمدان کی پیش کیا، کیونکہ ان میں عازمین حج کی خدمت کا جذبہ کوٹ کوٹ کر بھرا ہوا ہے۔ انہوں نے عازمین حج سے درخواست کی کہ وہ امن و امان، بھائی چارہ واخوت اور خوشحالی و ترقی کیلئے فریضہ حج کی ادائیگی کے دوران خصوصی دعا کریں۔ ان کے مطابق ہر مسلمان کی دلی تمنا ہوتی ہے کہ وہ زندگی میں کم از کم ایک مرتبہ حج کافریضہ ادا کریں، کیونکہ یہ مذہب اسلام کے پانچ فرائض میں ایک ہے۔ سیاسی مقاصد کیلئے نفرت پھیلانے والوں پر شدید نکتہ چینی کرتے ہوئے مسٹر سدارامیا نے بتایا کہ کسی بھی مذہب نے نفرت کی تعلیم نہیں دی۔مرکز کی بی جے پی حکومت کے ذریعہ حج سبسیڈی بند کرنے سے متعلق کئے گئے فیصلہ پر تنقید کرتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ اس سے بی جے پی حکومت کی مسلمانوں کے تئیں اپنی پالیسی واضح ہوجاتی ہے کہ مسلمانوں کے تعلق سے ان کا نظریہ کیا ہے۔ انہوں نے مرکزی حکومت سے سوال کیا کہ کیا سبسیڈی بند ہونے سے مسلمان فریضہ حج ادا کرنا بند کردیں گے، حکومت سبسیڈی دے یا نہ دے یہ فریضہ قیامت تک چلتا رہے گا۔

کے رحمن خان:   رکن راجیہ سبھا وسابق مرکزی وزیر کے رحمن خان نے حج انتظامات سے متعلق مستقل نظام کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے بتایا کہ جب مرکز میں یو پی اے قیادت والی حکومت قائم تھی، اس وقت پی چدمبرم کی قیادت میں کابینہ کی ذیلی کمیٹی تشکیل دی گئی تھی، جس نے اس خصوص میں فیصلہ لیا تھا کہ مستقل حج انتظامات کئے جائیں۔ انہوں نے مرکزی حکومت سے مطالبہ کیا کہ فوری طور پر اس فیصلہ پر عمل کیاجائے۔ انہوں نے بتایا کہ جن کو حج کا بلاو آئیگا وہی حج پر جائیگا، یہی ہمارا ایمان ہے۔ انہوں نے عازمین حج سے درخواست کی کہ وہ ملک میں جمہوریت و سکیولرزم کی بقا کیلئے دعاکریں۔ جو حالات گذر رہے ہیں ان سے پناہ کی دعا فرمائیں۔ حج انتظامات میں ہر سال تبدیلی لانے کے بجائے اس کیلئے اگر مستقل انتظام کیا جائے تو حجاج کرام کو کافی فائدہ ہوگا۔ مودی حکومت پر نکتہ چینی کرتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ یہ حکومت صرف تشہیر کیلئے کام کررہی ہے۔ بغیر محرم کے 45 سال سے زائد عمر والی خواتین کے سفر حج کیلئے سعودی حکومت نے منظوری دی ہے، مگر وزیر اعظم مودی اپنی من کی بات کہتے ہیں کہ جب انہیں پتہ چلا کہ مسلم خواتین بغیر محرم کے حج ادا نہیں کرسکتیں تو انہوں نے فوری حکم دیا کہ 45 سال سے زائد عمر والی خواتین کو بغیر محرم کے سفر حج کی اجازت دی جائے۔ جبکہ یہ فیصلہ سعودی حکومت کا تھا اور اسکا کریڈٹ مرکزی حکومت لینا چاہئے۔ مودی ڈرامائی انداز میں اس کا پورا کریڈٹ لینا چاہتے ہیں۔ سدارامیا کو سکیولر وزیر اعلیٰ قرار دیتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ حج بھون کیلئے انہوں نے فراخدلی سے مظاہرہ کیا اور جناب روشن بیگ کی کاوشوں سے بنگلورو میں ملک کا عالی شان و خوبصورت حج بھون تعمیر ہوسکا۔ جناب رحمن خان نے مشورہ دیا کہ مکہ اور مدینہ میں کرناٹکا کے حجاج کرام کے قیام کیلئے عمارت تعمیر کرنے کی گنجائش ہے، ایسے میں وہاں پر عمارت کی تعمیر کیلئے اقدامات کئے جائیں۔ انہوں نے سدارامیا سے درخواست کی کہ وہ اگلے انتخابات میں کامیابی حاصل کرنے کے بعد دوبارہ وزیر اعلیٰ بنیں گے تو وہاں پر عمارتوں کی تعمیر کیلئے مدد کریں۔

آر روشن بیگ: وزیر برائے شہری ترقیات و حج آر روشن بیگ نے اپنے خیر مقدمی کلمات میں بتایا کہ کرناٹکا کے حج کوٹہ میں اضافہ کیلئے ہر ممکن کوشش ہورہی ہے۔ اس خصوص میں مرکزی وزیر مملکت برائے اقلیتی امور مختار عباس نقوی سے وہ مسلسل ربط میں ہیں۔ پرائیوٹ ٹور آپریٹرس کو مافیا رقرار دیتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ اس دھاندلی پر قابو پانے کیلئے وزیر اعلیٰ اور وہ وزیر اعظم کے علاوہ مختار عباس نقوی پر دباؤ ڈالیں گے۔ انہوں نے بتایا کہ ریاست کے عازمین حج کو بہترین خدمات فراہم کرنے کی کوشش چل رہی ہے۔ حج سبسیڈی کے خاتمہ کا خیر مقدم کرتے ہوئے جناب روشن بیگ نے بتایا کہ ہمیں ہمارے مذہبی فریضہ کی ادائیگی کیلئے کسی کے سہارے کی ضرورت نہیں ہے۔ یہ زندہ قوم ہے، جسے کسی کے سہارے کی ضرورت نہیں پڑتی۔ انہوں نے مرکزی ذریعہ ہورہے اقدامات کو سیاسی تماشہ قرار دیتے ہوئے عازمین سے درخواست کی کہ وہ امن و خوشحالی کے علاوہ شمالی ہند میں مسلمانوں کے ساتھ ہورہی ناانصافیوں کے خاتمہ کیلئے دعا کریں۔ گؤ رکشکھوں کے نام پر ہورہے حملوں سے نجات کی دعا کریں۔ سدارامیا کو سیکولر قائد قرار دیتے ہوئے جناب روشن بیگ نے بتایا کہ انہوں نے اقتدار سنبھالنے کے بعد انسداد گؤ کشی قانون کے نفاذ کا فیصلہ لیاتھا، ایسے سکیولر لیڈر کو آئندہ بھی وزیر اعلیٰ کے عہدہ پر برقرار رہنا چاہئے۔ انہوں نے قرعہ میں منتخب نہ ہونے والے عازمین سے کہا کہ وہ مایوس نہ ہوں، ویٹنگ لسٹ رہے گی، اس کے علاوہ کوٹہ میں اضافہ کی ہر ممکن کوشش بھی ہورہی ہے۔ جلسہ کا آغاز مولانا افتخار احمد رشادی کی قرأت سے ہوا۔ محمد اعظم شاہد نے نظامت کی اس موقع پر رکن کونسل مدیر آغا، محکمہ اقلیتی بہبود کے سکریٹری محمد محسن، ریاستی حج کمیٹی کے ایگزی کیٹیو افسر سرفراز خان، ریساتی حج کمیٹی کے اراکین محمد ضمیر شاہ، سہیل بیگ، سید وحید اڈو، مولانا محمد حنیف افسر عزیزی، مولانا کے یم ابوبکر صدیق، مولانا میر شاعر علی، یم یس ارشد، سید مظہر حسین، سید مجتبیٰ حسین جاگیردار، جے سید ثناء اللہ، بلقیس بانو کے علاوہ دیگر موجود تھے۔ امیر شریعت مولانا صغیر احمد خان رشادی کی دعاؤں سے محفل اختتام کو پہنچیں۔

ایک نظر اس پر بھی

ملپے سے گم شدہ ماہی گیر کشتی معاملہ میں نیا موڑ: نیوی کے افسران نے مانا کہ جنگی جہاز سے ہواتھا کشتی کا تصادم

مہاراشٹرا میں سندھو درگ کے قریب سمندر میں ماہی گیری کے دوران مچھیروں سمیت لاپتہ ہونے والی کشتی ’سوورنا تریبھوجا‘ کے تعلق سے اب ایک نیا موڑ سامنے آیا ہے اور تحقیقاتی افسران کو یقین ہوگیا ہے کہ اس ماہی گیر کشتی کی ٹکر بحریہ کے ایک جنگی جہاز’آئی این ایس کوچی‘ سے ہوئی اور ماہی ...

کاروار بوٹ حادثہ: زندہ بچنے والوں نے کیا حیرت انگیز انکشاف قریب سے گذرنے والی بوٹوں سے لوگ فوٹوز کھینچتے رہے، مدد نہیں کی؛ حادثے کی وجوہات پر ایک نظر

کاروار ساحل سمندر میں پانچ کیلو میٹر کی دوری پر واقع جزیرہ کورم گڑھ پر سالانہ ہندو مذہبی تہوار منانے کے لئے زائرین کو لے جانے والی ایک کشتی ڈوبنے کا جو حادثہ پیش آیا ہے اس کے تعلق سے کچھ حقائق اور کچھ متضاد باتیں سامنے آرہی ہیں۔ سب سے چونکا دینے والی بات یہ ہے کہ کشتی جب  اُلٹ ...

گرفتاری کے خوف سے رکن اسمبلی جے این گنیش روپوش

بڈدی کے ایگل ٹن ریسارٹ میں ہوسپیٹ کے رکن اسمبلی آنند سنگھ پر حملہ کرنے والے رکن اسمبلی جے این ۔ گنیش کے خلاف بڑدی پولیس تھانہ میں ایف آئی آر داخل کرنے کی خبر کے بعد سے گنیش لاپتہ ہیں ۔

وسویشوریا یونیورسٹی رجسٹرار پر200کروڑ کے گھپلے کا الزام گورنر نے چھان بین کے لئے وظیفہ یاب جج کو مقرر کیا ۔ تعاون کرنے ملزم کو ہدایت

وسویشوریا ٹکنالوجیکل یونیورسٹی (وی ٹی یو) کے رجسٹرار اب مشکل میں پڑگئے ہیں۔ گورنر واجو بھائی روڈا بھائی والا نے جو یونیورسٹی کے چانسلر بھی ہیں،200کروڑ روپئے تک کے گھوٹالے کی چھان بین کا حکم دیا ہے۔

لنگایت طبقہ کے مذہبی رہنما شیوکمارسوامی کی آخری رسومات ادا، اسلامی تعلیمات اوراردو زبان سے بھی تھی واقفیت

یاست کرناٹک کی ایک عظیم شخصیت، لنگا یت طبقہ کے مذہبی رہنما، شیوکمارسوامی جی کی آج آخری رسومات انجام دی گئیں۔ بنگلورو کے قریب واقع ٹمکورشہرمیں شیوکمارسوامی جی کولنگایت رسومات کے مطابق دفنایا گیا۔ سدگنگا مٹھ میں آج اورکل لاکھوں کی تعداد میں لوگوں نے سوامی جی کا آخری ...

پُتور میں پیک آپ کار کی اومنی سے خطرناک ٹکر؛ ایک کی موت، دو شدید زخمی

ماروتی اومنی اور  پیک آپ کے درمیان ہوئی خطرناک ٹکر کے  نتیجے میں اومنی پر سوار ایک شخص کی موت واقع ہوگئی، جبکہ دوسرا شدید زخمی ہوگیا، حادثے میں پیک آپ کار ڈرائیور کو بھی چوٹیں آئی ہیں ۔ حادثہ منگل صبح مُکوے مسجد کے سامنے   پیش آیا۔

شیرور میں کار کی ٹکر سے بائک سوار کی موت

پڑوسی علاقہ شیرور نیشنل ہائی وے پر ایک کار کی ٹکر میں بائک سوار کی موقع پر ہی موت واقع ہوگئی جس کی شناخت محمد راشد ابن محمد مشتاق (21) کی حیثیت سے کی گئی ہے جو شیرور  بخاری کالونی کا رہنے والا تھا۔

ہائی کمان کہے تو وزارت چھوڑ نے کیلئے بھی تیار : ڈی کے شیو کمار

ریاست میں سیاسی گہما گہمی کا فی تیز ہونے لگی ہے ۔ ایک طرف جہاں کانگریس اور جنتادل( سکیولر) اپنی مخلوط حکومت کو بچانے میں لگے ہیں وہیں بھارتیہ جنتا پارٹی ( بی جے پی ) نے آپریشن کنول کے ذریعہ دیگر پارٹیوں کے اراکین اسمبلی کو خریدکر برسر اقتدار آنے کے حربے جاری رکھے ہیں۔