لبنان میں حکومت مخالف ریلی میں 5000 لوگوں کا مظاہرہ

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 17th December 2018, 12:03 PM | عالمی خبریں |

بیروت،17؍دسمبر (ایس او نیوز؍ایجنسی)  لبنان میں مئی سے جاری سیاسی بحران کے درمیان بائیں بازو کی جانب سے منعقد حکومت مخالف مظاہرے میں حصہ لینے کے لئے راجدھانی بیروت میں 5000 سے زیادہ لوگ سڑکوں پر اتر آئے۔

مظاہرین نے ’ناکام‘ اقتصادی پالیسی اور نجی بینکوں کو بجٹ فنڈ کی مبینہ منتقلی اور ملک میں جاری توانائی کے بحران کے لئے حکومت اور ممبران پارلیمنٹ پر سخت تنقید کی۔ مظاہروں میں حصہ لینے والے کارکنوں نے ’غربت کی پالیسی‘ کے خلاف ریلیوں کا سلسلہ شروع کرنے کا بھی اعلان کیا۔

لبنان میں حکمراں پارٹیاں اب تک حکومت قائم نہیں کر سکی ہیں اور ایک دوسرے پر ملک کے مفاد کو نظر انداز کر کے اپنے مفادات کو آگے بڑھانے کا الزام لگا رہی ہیں۔ اس کے علاوہ ملک کی معاشی حالت مسلسل خراب ہوتی جا رہی ہے۔

غیر ملکی قرض میں اضافہ کے ساتھ ساتھ بے روزگاری اور قیمتوں میں بھی اضافہ ہوا ہے۔ ملک میں شام سے 10 لاکھ سے زیادہ رجسٹرڈ پناہ گزینوں کی موجودگی سے حالات مزید ابتر ہوگئے ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

سشما سوراج نےمالدیپ کے وزیر داخلہ عمران عبداللہ سے ملاقات کی، دو طرفہ تعلقات پر ہوئی بحث

وزیر خارجہ سشما سوراج نے پیر کو مالدیپ کے وزیر داخلہ عمران عبداللہ سے ملاقات کی اور دونوں ممالک کے درمیان دوطرفہ تعلقات کو مسلسل آگے بڑھانے کی سمت میں اٹھائے جانے والے اقدامات پر تبادلہ خیال کیا۔

حملے سے 9 منٹ پہلے ہمیں مسلح شخص کا بیان ملا: کیوی وزیر اعظم کا انکشاف

نیوزی لینڈ کی وزیر اعظم جاسنڈا آرڈرن نے بتایا ہے کہ جمعہ کے روز کرائسٹ چرچ میں ہونے والے دہشت گرد حملے کی اطلاع انہیں بہیمانہ واردات سے صرف نو منٹ قبل ملی تھی، جسے انہوں نے اگلے دو منٹوں میں سیکیورٹی نافذ کرنے والے اداروں تک پہنچا دیا تھا۔