وشویشوریا ٹیکنالوجیکل یونیورسٹی (وی ٹی یو) کے200؍میں سے 44؍کالج غیر معیاری

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 1st August 2018, 11:29 AM | ریاستی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

بنگلورویکم اگست (ایس او  نیوز) وشویشوریا ٹیکنالوجیکل یونویرسٹی سے ملحق دو سو انجینئرنگ کالجوں میں سے 44؍کالجوں کو سی اور ڈی زمرہ میں شامل کیا گیا ہے ، واضح رہے کہ ایسے کالج جن میں بنیادی ڈھانچہ کی کمی ہوتی ہے یا جہاں با صلاحیت تدریسی عملہ کی قلت ہوتی ہیں ان کالجوں کو سی اور ڈی کے زمرہ میں شمار کیا جاتا ہے۔یہ زمرہ بندی حال ہی میں مقامی تحقیقاتی کمیٹی ( ایل آئی سی) کی طرف سے داخل کردہ رپورٹ کی بنیاد پر کی گئی ہے ، اس رپورٹ کو یونیورسٹی کی اکیڈمک سینیٹ کے سامنے پیش کیا گیا تھا۔

ان44؍ میں سے8؍سرکاری کالج ہیں اور باقی تمام خانگی کالج ہیں جن میں امدادی اور غیر امدادی دونوں شامل ہیں، اس تمام کالجوں کے صدر مدرسین کو اس تعلق سے اطلاع فراہم کرنے کے لئے مراسلہ روانہ کر دیا گیا ہے۔نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے یونیورسٹی کے رجسٹرار پروفیسر جگناتھ ریڈی نے بتایا کہ ’’ان کالجوں کو یہ تنبیہ کی گئی ہے کہ جہاں تک بنیادی ڈھانچہ اور تدریسی عملہ کا معاملہ ہے وہ آل انڈیا کونسل فار ٹیکنیکل ایجوکیشن (اے آئی سی ٹی اجی) اور وی ٹی یو کے ضابطوں کو پورا کرنے کی کوشش کریں ۔اگر وہ اگلی مرتبہ ایل آئی سی کے دورے سے قبل خود کو بہتر بنانے میں ناکام ہو تے ہیں تو ان کالجوں کے خلاف اگلے اقدام کے لئے یونویرسٹی مجبور ہوگی‘‘۔

اپنے دورے کے دوران ایل آئی سی نے جن باتوں کا مشاہدہ کیا ہے ان کے مطابق ان 44؍ کالجوں میں مناسب بنیادی ڈھانچہ کا فقدان ہے، تجربہ گاہوں کی سہولیات بھی میسر نہیں ہیں ، اتنا ہی نہیں بلکہ اساتذہ بھی بہتر اہلیت کے حامل نہیں ہیں، جس کی وجہ سے ان کالجوں کو سی اور ڈی کے زمرات میں شامل کیا گیا ہے اور ان کے خلاف اقدامات کرتے ہوئے یونیورسٹی نے ان کے نام تنبیہی خطوط روانہ کئے ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

کمار سوامی نے بارش کی تباہ کاریوں کا جائزہ لیا؛ متاثرہ علاقوں میں راحت کاری کے لئے فنڈز کی کوئی کمی نہیں : وزیراعلیٰ

ریاستی ساحلی اور ملناڈ علاقوں میں جاری موسلادھار بارش کی وجہ سے ہورہی تباہی اور اس سے نپٹنے کے لئے ضلع اور ریاستی انتظامیہ کی طرف سے اٹھائے گئے اقدامات کا آج وزیر اعلیٰ ایچ ڈی کمار سوامی نے چیف سکریٹری ٹی ایم وجئے بھاسکر کے ہمراہ جائزہ لیا۔

کابینہ میں توسیع کے لئے اراکین اسمبلی بضد،17اراکین اسمبلی ستمبر کے پہلے ہفتے میں استعفیٰ دینے تیار

ریاست کے سیاسی حلقوں میں یہ خبریں ہلچل کا سبب بنی ہوئی ہیں کہ کابینہ میں توسیع میں تاخیر سے ناراض کانگریس اور جنتادل (ایس) کے 17 سے زائد اراکین اسمبلی نے اگست کے اختتام تک مہلت دی ہے

کورگ میں بارش کی بھاری تباہی ، تین اموات،زمین کھسکنے کے متعدد واقعات 

جنوبی ہند کا کشمیر کہلانے والے ریاست کے کورگ ضلع میں بارش نے زبردست تباہی مچادی ہے۔ ایک طرف بارش کا سلسلہ رکنے کا نام نہیں لے رہا ہے تو دوسری طرف پڑوسی ریاست کیرلا میں طوفانی بارش کے سبب وہاں کی ندیوں کا پانی بھی کرناٹک کی طرف بہادیا گیا ہے،

بنگلورو شہر کے میئر کے عہدے پر اپنے معتمد کو فائز کرنے پرمیشور کی کوشش،نائب وزیراعلیٰ کی بی بی ایم پی پر اجارہ داری پر کانگریس اراکین اسمبلی برہم

برہت بنگلور مہانگر پالیکے کے موجودہ میئر کی میعاد آئندہ ماہ مکمل ہوجائے گی۔ ستمبر کے اختتام پر شہر کے لئے نئے میئر کا انتخاب ہونا ہے۔

کورگ میں بارش کی بھاری تباہی ، تین اموات،زمین کھسکنے کے متعدد واقعات 

جنوبی ہند کا کشمیر کہلانے والے ریاست کے کورگ ضلع میں بارش نے زبردست تباہی مچادی ہے۔ ایک طرف بارش کا سلسلہ رکنے کا نام نہیں لے رہا ہے تو دوسری طرف پڑوسی ریاست کیرلا میں طوفانی بارش کے سبب وہاں کی ندیوں کا پانی بھی کرناٹک کی طرف بہادیا گیا ہے،

مہادائی ٹریبونل کے فیصلے کا چیلنج کرنے ریاستی حکومت تیار

ریاستی وزیر برائے آبی وسائل ڈی کے شیوکمار نے کہاکہ شمالی کرناٹک کے بعض اضلاع کو پینے کے پانی کی فراہمی کا واحد ذریعہ مہادائی کے پانی کی تقسیم کے سلسلے میں حال ہی میں ٹریبونل نے جو فیصلہ صادر کیا ہے ریاستی حکومت اس کا سپریم کورٹ میں چیلنج کرے گی۔

بھٹکل میونسپل پارک کی تجدیدکاری میں بدعنوانی کا الزام۔ ڈپٹی کمشنر کے نام میمورنڈم

بھٹکل بلدیہ کے حدود میں بندر روڈ پر واقع سردار ولبھ بھائی پٹیل پارک کی تجدید کاری میں بدعنوانی کا الزام لگاتے ہوئے  آسارکیری کے عوام  نے بلدیہ انجینئر کو پارک میں طلب کرکے ڈپٹی کمشنر کے نام میمورنڈم دیا جس میں مطالبہ کیا گیا ہے کہ یہاں ہورہی بدعنوانی کی تحقیقات کروائی جائے۔