ملپے بوٹ کی گمشدگی کا معاملہ؛ بوٹ سمیت ماہی گیروں کا سراغ لگانے 200 بوٹ لے کر ماہی گیر خود نکل پڑے؛ مہاراشٹرا میں قید رکھے جانے کا وزیر ماہی گیری کو شک

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 14th January 2019, 2:49 PM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں | ملکی خبریں |

منگلورو14؍جنوری (ایس او نیوز) گہرے سمندر میں ماہی گیری کے دوران 15دسمبر کو لاپتہ ہونے والی کشتی سمیت اُس پر سوار سات  ماہی گیروں کا ابھی تک کوئی سراغ نہیں ملا ہے جس کو لے کر پورے ساحلی کرناٹکا کے ماہی گیروں میں سخت تشویش پائی جارہی ہے۔ سرکار کی طرف سے تلاشی مہم برابر جاری ہے مگر ہنوز کوئی پتہ نہ چلنے سے اب ماہی گیروں نے خود سمندر میں اُتر کر لاپتہ بوٹ کا پتہ لگانے کا فیصلہ کیا ہے۔ ذرائع سے ملی اطلاع کے مطابق ملپے سے قریب دو سو بوٹوں پر سوار سینکڑوں ماہی گیر  لاپتہ بوٹ کا پتہ لگانے سمندر میں اُترچکی ہیں۔

اس دوران کبھی انٹلی جنس بیوریو کے حوالے سے اور کبھی وزراء کے حوالے سے کئی طرح کے شکوک و شبہات پیش  ظاہر کیے جارہے ہیں۔ ابھی ایک دن قبل اس کو’سمندری جہاد‘ کے تربیت یافتہ پاکستانی دہشت گردوں کی کارستانی سے جوڑنے والی خبریں میڈیا میں آئی تھیں۔ مگر اب ریاستی وزیر ماہی گیری وینکٹ راؤ ناڈاگوڈا نے بنگلورو میں اخبار نویسوں سے بات چیت کے دوران شبہ ظاہر کیا ہے  کہ مہاراشٹرا کے رتناگیری اور سندھو درگ کے علاقے میں ان ماہی گیروں کو قید کرکے رکھا گیا ہوگا۔ اس سلسلے میں وزارت داخلہ، کوسٹ گارڈبحریہ اور اِسرو وغیرہ کے تعاون لینے ، وائرلیس پیغامات سے کچھ سراغ لگنے ، مہاراشٹرا اور گوا کی حکومتوں کے ساتھ بات چیت ہونے کے بارے میں بھی انہوں نے  اشارے کیے۔ 

لیکن دوسری طرف وزیر داخلہ ایم بی پاٹل نے صاف انکار کرتے ہوئے کہا کہ’’ ماہی گیروں کے تعلق سے کسی قسم کا سراغ ملنے کی باتیں بالکل غلط ہیں۔ بات صرف اتنی ہے کہ حکومت اپنے طور پر پوری کوشش کررہی ہے اور تلاشی مہم تیزی کے ساتھ جاری ہے۔‘‘

ذرائع سے ملنے والی اطلاع  کے مطابق فی الحال اُڈپی ڈسٹرکٹ  پولس کی قیادت میں پولیس کی 2ٹیمیں’ سوورنا بھوجا‘ نامی لاپتہ کشتی اور سات ماہی گیروں کی تلاش میں لگی ہوئی ہیں۔جو مہاراشٹرا کے رتناگیری، سندھودرگ ، گوا اور کیرالہ کے مختلف علاقوں میں سرچ آپریشن چلارہی ہیں ان کے ساتھ مقامی ماہی گیروں کو بھی شامل کیا گیا ہے، مگر  کہیں سے بھی تاحال کوئی بھی مثبت سراغ ہاتھ نہیں لگا ہے ۔ 

اس بات کی بھی خبر ملی ہے کہ اُڈپی کے ضلعی ایس پی لکشمن نمبرگی نے ممبئی ایس پی سے درخواست کی ہے کہ وہ اُس  وائرلیس پیغام کے تعلق سے  جانکاری حاصل کریں جو سندھودرگ کے مالوان  کے بعض ماہی گیروں نے سُنا تھا ، جس میں ایک بوٹ سے   پوچھا جارہا  تھا کہ کیا وہاں کوئی حادثہ پیش آیا ہے ؟ 

ملپے سے 200 بوٹ سراغ لگانے کے لئے سمندر میں اُتر گئیں:   اس دوران پچھلے کئی دنوں سے ہڑتال کرنے اور سمندر میں ماہی گیری کے لئے نہ نکلنے والی کشتیوں نے ملپے بندرگاہ سے دوبارہ سمندر میں اترنے کا فیصلہ کیا تا کہ ماہی گیری کے ساتھ ساتھ لاپتہ افراد اور کشتی کا پتہ لگانے کی مہم میں ساتھ دیا جاسکے۔ماہی گیروں کی تنظیم کے صدر ستیش کُندر کے مطابق سنیچر کی رات سے ہی تقریباً 200ماہی گیر کشتیاں سمندر میں نکل گئیں۔ اس کے علاوہ ماہی گیروں کی تلاشی مہم میں تعاون کرنے کے لئے مختلف ماہی گیر تنظیموں سے وابستہ 26 مچھیروں پر مشتمل ایک کمیٹی تشکیل دی گئی ہے ، جو پولیس اور دیگر محکمہ جات کی طرف سے کی جارہی تلاشی کی نگرانی کرے گی۔ انہوں نے بتایا کہ جب تک لاپتہ کشتی اور مچھیروں کا پتہ نہیں چلتا، تب تک یہ ٹیم پوری طرح سرگرم رہے گی۔

ستیش کندر نے بتایا کہ مزید دو دنوں تک تحقیقاتی سرگرمیوں اوراس کے نتائج کا جائزہ لینے کے بعد اگلی کارروائی کے سلسلے میں فیصلہ کیا جائے گا۔کیونکہ ڈسٹرکٹ انچارج وزیر جیا مالا سے اِسرو سے تعاون لینے کے بارے میں پوچھنے پر کوئی واضح جواب نہیں ملا ہے۔ اس مسئلے کو وزیر داخلہ ایم بی پاٹل کے سامنے لایا جائے گا۔

یاد رہے کہ ملپے سے ماہی گیری کے لئے اُتر ی بوٹ پر  ملپے کے دو، بھٹکل کے دو، کمٹہ کے دو اور ہوناور تعلقہ کے منکی کا ایک ماہی گیر سوار تھا، یہ لوگ 13 ڈسمبر کو ماہی گیری کے لئے ملپے بوٹ سے روانہ ہوئے تھے، 15 ڈسمبر کو ان سے رابطہ منقطع ہوگیا تھا، تب سے لے کر اب تک ان کا کوئی سراغ نہیں مل پایا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

دارالعلوم اسلامیہ عربیہ تلوجہ میں علمائے شوافع کی جانب سے فقہی سمینار کا آغاز؛ علماء فقہائے شوافع نے حقیقتاً حدیث اور فقہ میں بہت نمایاں کام کیاہے: خالد سیف اللہ رحمانی 

بروز سنیچر 19؍ جنوری مجمع الامام الشافعی العالمی کی جانب سے دو روزہ پہلے فقہی سمینار کا آغاز کیا گیا اس سمینار کا افتتاحی جلسہ صبح 10؍ بجے جامعہ دارالعلوم اسلامیہ عربیہ تلوجہ ممبئی میں منعقد کیا گیا

بھٹکل: ریاست کے مشہور سد گنگامٹھ کے شری کمار سوامی جی کی وفات پر رابطہ ملت اترکنڑا کا اظہار تعزیت

ریاست کے قدآور ، معروف سد گنگا مٹھ کے شری کمار سوامی جی کے دارِ فانی سے کوچ کر جانے پر رابطہ ملت اترکنڑا ضلع کے عہدیداران نے اظہار تعزیت کرتے ہوئے کہا ہے کہ سوامی جی ملک کی ایک قوت کی مانند تھے۔

گنگولی کے آراٹے ندی میں غرق ہوکر لاپتہ ہونے والے ماہی گیر کی نعش آج برآمد

یہاں آراٹے ندی میں غرق ہوکر کل رات ایک ماہی گیر لاپتہ ہوگیا تھا، جس کی نعش آج متعلقہ ندی سے برآمد کرلی گئی ہے۔ ماہی گیر کی شناخت آراٹے کڑین باگل کے رہنے والے  کرشنا موگویرا (50) کی حیثیت سے کی گئی ہے۔

کنداپور میں ہوئی چوری کی واردات کے بعد پولس نے گھر میں نوکری کرنے والے میاں بیوی کوکیا گرفتار

کنداور دیہات کے سٹپاڑی کے ایک گھرمیں ہوئی  چوری کے معاملے میں کنداپور دیہی پولس نے فوری کارروائی کرتے ہوئے اسی گھر میں کام کرنےو الے میاں بیوی کو صرف دو دنوں میں ہی گرفتار کر کے معاملے کو حل کرنے میں کامیابی حاصل کرلی  ہے۔

ہوناور قومی شاہراہ پرگزرنےو الی بھاری وزنی لاریوں سے سڑک خستہ؛ میگنیز کی دھول اور ٹکڑوں سے ڈرائیوروں اور مسافروں کو خطرہ

حکومت عوام کو کئی ساری سہولیات مہیا کرتی رہتی ہے، مگر ان سہولیات سے استفادہ کرنےو الوں سے زیادہ اس کاغلط استعمال کرنے والے ہی زیادہ ہوتے ہیں، اس کی زندہ مثال  فورلین میں منتقل ہونے والی  قومی شاہراہ 66پر گزرنے والی بھاری وزنی لاریاں  ہیں۔

دارالعلوم اسلامیہ عربیہ تلوجہ میں علمائے شوافع کی جانب سے فقہی سمینار کا آغاز؛ علماء فقہائے شوافع نے حقیقتاً حدیث اور فقہ میں بہت نمایاں کام کیاہے: خالد سیف اللہ رحمانی 

بروز سنیچر 19؍ جنوری مجمع الامام الشافعی العالمی کی جانب سے دو روزہ پہلے فقہی سمینار کا آغاز کیا گیا اس سمینار کا افتتاحی جلسہ صبح 10؍ بجے جامعہ دارالعلوم اسلامیہ عربیہ تلوجہ ممبئی میں منعقد کیا گیا

کاروار بحر عرب میں کشتی اُلٹنے کا معاملہ؛ مرنے والوں کی تعداد بڑھ کرہوگئی 16، اب تک 14 نعشیں برآمد

بحرعرب میں کشتی الٹنے سے کل دس سے زائد لوگوں کی ہلاکت کی خبر دی گئی تھی جس میں کئی ایک لاشوں کو برآمد کیا گیا تھا اور راحت اور بچائو کا کام جاری تھا، اس تعلق سے آج مزید چھ لاشیں سمندر سے برآمد کی گئی ہیں اور  بتایا گیا ہے کہ مزید دو   کی تلاش جاری ہے۔ اس طرح کاروار میں کشتی ...

کرناٹک سدھ گنگا مٹھ کے سوامی شیو کمارکا 111 سال کی عمر میں انتقال؛ ریاست بھر میں ماتم؛ کل منگل کو اسکولوں میں چھٹی

ریاست کرناٹک کے معروف سوامی اور سدھ گنگا پیٹھ کے سربراہ 111سالہ شیو کمار سوامی جی آج پیر کو  انتقال کرگئے۔ ان کے انتقال پر پوری ریاست میں ماتم چھا گیا اور  وزیر اعلی ایچ ڈی کمارسوامی نے کل منگل کو  سبھی اسکولوں اور کالجوں میں چھٹی  کا اعلان کیا۔

ہم بے قصور تھے، مگر وہ ہماری زبان سمجھنے سے قاصر تھے، ایرانی حراست سے رہا ہونے کے بعد ماہی گیروں کا بھٹکل میں والہانہ استقبال

دبئی سمندر میں ماہی گیر ی کے دوران ایرانی پولیس کی تحویل میں رہنے کے بعد واپس لوٹنے والے کمٹہ اور بھٹکل کے ماہی گیروں کا کہنا ہے کہ ان کے لئے سب سے بڑا مسئلہ زبان کا تھا۔ ایرانی افسران ان کی زبان سمجھ نہیں رہے تھے ۔ اور ایرانی سمندری سرحد پار نہ کرنے کا یقین دلانے کے باوجود وہ لوگ ...

کاروار: بیچ سمندر میں کشتی اُلٹ گئی؛ دس سے زائد ہلاک ؛ راحت اور بچاو کا کام جاری، 25 سے زائد لوگ تھے کشتی پر سوار

کاروار میں کورم گڑھ جاترا کے لئے نکلی ایک کشتی بیچ سمندر میں ڈوب جانے سے کشتی پر سوار چھ لوگوں کی موت واقع ہونے کی اطلاع موصول ہوئی ہے، بتایا گیا ہے کہ مرنے والوں کی تعداد میں اضافہ ہونے کا خدشہ ہے کیونکہ کشتی پر موجود 25 سے زائد لوگوں میں دو چار لوگوں کو ہی بچانے کی خبر ملی  ہے، ...

اپوزیشن کی جانب سے وزیراعظم کا اُمیدوارکون ؟ راہول گاندھی، مایاوتی یا ممتا بنرجی ؟

آنے والے لوک سبھا انتخابات میں اپوزیشن کی جانب سے وزیراعظم کے عہدے کا اُمیدوار کون ہوگا اس سوال کا جواب ہرکوئی تلاش کررہا ہے، ایسے میں سابق وزیر خارجہ اور کانگریس کے سابق سنئیر لیڈر نٹور سنگھ نے بڑا بیان دیتے ہوئے کہا ہے کہ  اس وقت بہوجن سماج پارٹی (بی ایس پی) سربراہ مایاوتی ...

مدھیہ پردیش میں 5روپے، 13روپے کی ہوئی قرض معافی، کسانوں نے کہا،اتنی کی تو ہم بیڑی پی جاتے ہیں

مدھیہ پردیش میں جے کسان زراعت منصوبہ کے تحت کسانوں کے قرض معافی کے فارم بھرنے لگے ہیں لیکن کسانوں کو اس فہرست سے لیکن جوفہرست سرکاری دفاترمیں چپکائی جارہی ہے اس سے کسان کافی پریشان ہیں،