20فروری سے اسکول میں بچوں کے مفت داخلوں کا آغاز

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 12th February 2018, 11:39 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،11؍فروری(ایس او نیوز)سرکاری اور خانگی اسکولوں دونوں طرح کی اسکولوں میں 25 فیصدی آن لائن داخلوں کی کارروائی کا آغاز اب20 فروری سے کرنے کے لئے محکمہ تعلیم نے تیاریاں شروع کردی ہیں۔اس سے قبل15فروری کی تاریخ ہی سے داخلوں کی شروعات کا اعلان کیا گیا تھا لیکنکچھ تکنیکی ضروریات کے تحت 19 تاریخ کو پانچ دنوں کے لئے آگے بڑھا دیا گیا ہے، واضح رہے کہ پچھلے سال سے ہی آدھار کارڈ کو داخلوں کے لئے لازمی قرار دیا جا چکا ہے اور اس میں درج پن کوڈ نمبر کی بنیاد پر ہی وارڈوں کی تقسیم اور داخلہ کے لئے اسکولوں کی فہرست کی تیاری ہوئی ہے۔اب والدین یا سرپرستان کو آن لائن درخواست جمع کرنے میں کوئی پریشانی نہیں ہوگی، درخواست جمع کرنے کے وقت ہی ان کی وارڈ حدود میں کون کون سی اسکولس موجود ہیں اور کن اسکولوں میں داخلہ حاصل کیا جا سکتا ہے اس کی تفصیلات مل جائیں گی اور مزید برآں ضروری دستاویزات کی جانچ بھی آن لائن ہی ہو جائے گی۔ پچھلے سال وارڈ سے باہر رہنے والے کئی افراد نے غلط دستاویزات بنا کر اپنی پسند کی اسکولوں میں داخلہ لے لیا تھا لیکن اس مرتبہ یہ ممکن نہیں ہوگا اس لئے کہ آن لائن رجسٹریشن کے موقع پر ایسی دستاویزات خود بخود مسترد کر دی جائیں گی۔محکمہ تعلیم کے ڈائرکٹر کے آنند نے بتایا کہ ،آن لائن میں آر ٹی ای کے تحت بچوں کے داخلہ کے سلسلہ میں محکمہ کی طرف سے کیا گیا تجربہ تقریباً کامیاب رہا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

ہمیں اپنی چھٹیوں سے لطف اندوزہونے دیجئے : جسٹس سیکری

کرناٹک میں اقتدار کو لے کر تنازعہ پر سماعت مکمل کرتے ہوئے سپریم کورٹ نے آج کہا کہ اب ہمیں اپنی چھٹیوں سے لطف اندوز ہونے دیجئے۔ عدالت عظمیٰ میں تین ججوں کے ایک بنچ کی صدارت کر رہے جسٹس اے کے سیکری نے جب عجیب انداز میں یہ تبصرہ کیا اس وقت عدالتی کمرہ قہقہوں سے گونج اٹھا۔

کرناٹک سیاسی بحران: یہ آئین اور دستور کی جیت ہے :ملی کونسل

کرناٹک میں جاری سیاسی ہنگامہ آرائی پر آج پہلی مرتبہ ملک کی معروف تنظیم آل انڈیا ملی کونسل کے جنرل سکریٹری ڈاکٹر محمد منظور عالم نے اپنے ردعمل کا اظہا رکرتے ہوئے کہاکہ مرکز میں برسر اقتدار بی جے پی حکومت نے وہاں دستور کی دھجیاں اڑانے کی کوشش کی تھی

کرناٹک کے عوام نے تینوں پارٹیوں کو خوش کردیا

تمام ہنگامی حالات کا سامنا کرنے کے بعد کرناٹک کی سیاست ایک اطمینان بخش مرحلہ تک پہنچ گئی ہے ۔ ایڈی یورپا نے استعفیٰ دے دیا ، جے ڈی ایس اور کانگریس کی مخلوط حکومت کا بننا تقریباًطے ہے۔

بی جے پی کی حکومت گرنے کے بعد اب کمارا سوامی ہوں گے نئے وزیراعلیٰ، چہارشنبہ کو لیں گے حلف

بی جے پی رہنما بی ایس ایڈی یورپا کے استعفیٰ کے ساتھ ہی جے ڈی ایس کے ریاستی سربراہ ایچ ڈی کمارسوامی کی قیادت میں کرناٹک میں تین دن پرانی بی ایس ایڈی یورپا حکومت بلاخر آج ختم ہوگئی جب چیف منسٹر ایڈی یورپا نے اعلان کیا کہ وہ ایوان میں اکثریت کے امتحان میں سامنا نہیں کرگے بلکہ اس سے ...

ہندوستانی سیاست کے لئے تاریخی دن: سدارمیا، چندرابابو نائیڈو، ممتابنرجی اوردیگر لیڈروں نے جمہوریت کی جیت قرار دیا

کرناٹک اسمبلی میں اکثریت ثابت کرنے سے پہلے بی جے پی لیڈر یدی یورپا نے وزیراعلیٰ عہدہ سے استعفیٰ دے دیا۔ یدی یورپا کے استعفیٰ پر تمام لیڈروں نے ردعمل ظاہر کیا۔