ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے
Mohtis Side Banner
img

مصباح کی زیر قیادت پاکستانی ٹیم دورۂ آسٹریلیا کیلئے خطرناک:سڈل

آسٹریلیا کرکٹ ٹیم کے زخمی فاسٹ بولر پیٹرسڈل نے یاسر شاہ کو پاکستانی بولنگ کی کنجی قراردیتے ہوئے مصباح کی قیادت میں ٹیم کو دورہ آسٹریلیا کے لئے خطرناک قرار دیا ہے ۔کرکٹ آسٹریلیا کو دیے گئے ایک انٹرویو میں پیٹرسڈل نے کہا کہ پاکستان نے گزشتہ ایک سال کے دوران ہمیں بہت حیران کیا ہے اور انھوں نے مستقل مزاجی سے کرکٹ کھیلی ہے ۔

img

کپتان دھونی نہیں بنا سکے آخری گیند پر 2 رنز،دلچسپ اور سنسنی خیز میچ میں انڈیا کو ایک رن سے شکست

امریکی سرزمین پر مہندر سنگھ دھونی کی ٹیم پہلی بار کھیل رہی ہے، مگراپنے پہلے ہی ٹی -20 میچ میں انڈیا کو ورلڈ چیمپئن ویسٹ انڈیز کے ساتھ. فلوریڈا کے لڈرهل میں مرکزی برورڈ نیشنل پارک میں ایک رنز سے شکست کا سامنا کرنا پڑا ہے۔ دلچسپ اور سنسنی خیز میچ میں انڈیا کو جیت کے لئے آخری گیند پر دو رنوں کی ضرورت تھی، اگر ایک رن بھی بنتا تو میچ برابری پر ختم ہوجاتا، مگر کپتان مہندر سنگھ دھونی جو آخری گیند پر چھکا لگانے میں بھی ماہر سمجھے جاتے ہیں،آخری گیند پر کیچ دے کر آوٹ ہوگئے۔

img

بے گھرغریبوں کے لئے مکانات کا منصوبہ "نیا گاوں "تباہ ہوگیا

یہ اس وقت کی بات ہے جب کرناٹکا میں ایس ایم کرشنا وزیر اعلیٰ کے عہدے پر فائز تھے۔ انہوں نے بے گھر غریبوں کے چھوٹے چھوٹے مکانات تعمیر کرنے اور نیا گاوں بسانے کا منصوبہ بنایا جسے " نو گرام یوجنا" کا نام دیا گیا۔جس کے تحت خالی پڑی ہوئی ریوینیو جگہ پر 30x40 فٹ کے مکانات تعمیر کرکے غریبوں کواس کا مالک بنانا مقصود تھا۔

img

بھٹکل کی مساجد میں قائم شبینہ مکاتب کا نظام ملک کے دیگر علاقوں کے لیے مثالی

اسکولی بچوں کے لئے اسکول کی چھٹی کے بعد کے بعد مساجد میں دین کی بنیادی باتیں اور قرآن سکھانے کے ساتھ ساتھ اسلامی آداب اور دعائیں سکھانے کا نظم کرنا بڑی بات ہے۔بھٹکل کی مساجد کے تحت اس قسم کے شبینہ مکاتب کا انتظام کیا گیا ہے،

img

جمہوریت کا چوتھا ستون ہی منہدم ہوگیا تو ۔۔۔۔۔؟ از: ایم، اے ، کلّاپو۔منگلورو

’’اس ملک میں اظہارِ رائے نام کی ایک آزادی بھی ہے،جس کے تحت تحریر ، تقریر، دھرنا، احتجاج کے ذریعے اپنے جذبات کا اظہار کئے جانے کا حق تمام کو ہے ہی۔ لیکن اس کے لئے سڑک پر ہنگامہ خیزی کرنے والوں کا پیدائشی حق سمجھنا خطرناک ہوگا۔ اس سلسلے میں ریاست کے کچھ میڈیا والے دوبارہ غوروفکر کرنے کی ضرورت ہے‘‘